- الإعلانات -

‘جاوید اختر اور شبانہ اعظمیٰ کو مدعو کرنے کے فیصلے پر پچھتاوا ہے’

کراچی آرٹس کونسل نے بھارتی اداکارہ شبانہ اعظمیٰ اور ان کے شوہر جاوید اختر کو ایک کانفرنس کے لیے مدعو کرنے کے فیصلے پر پچھتاوے کا اظہار کیا ہے۔

یہ کانفرنس شبانہ اعظمیٰ کے والد کیفی اعظمی کے یوم پیدائش کی مناسب سے ہورہی ہے مگر بولی وڈ اداکارہ اور ان کے شوہر اور مشہور شاعر جاوید اختر نے پلوامہ حملے کے بعد شرکت سے انکار کردیا۔

ہفتے کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آرٹس کونسل کے صدر احمد شاہ نے جاوید اختر کی جانب سے پاکستان کے خلاف بیان کی مذمت کی اور کہا کہ انہوں نے ‘حد عبور کرلی’ جو کہ کسی ادبی شخصیت کے لیے مناسب نہیں۔

ان کا کہنا تھا ‘میں شبانہ اعظمیٰ کے لیے برا محسوس کررہا ہوں جو امید سے محروم ہوگئیں، میں ان پر تنقید نہیں کرتا مگر ان کی جانب سے پلوامہ حملے کے بعد جذبات کے اظہار پر دلی طور پر افسردہ ہوں۔ ہمارا مضبوط عقیدہ ہے کہ فنکاروں اور ادبی شخصیات لوگوں کے اندر امید جگاتے ہیں، وہ انہیں کبھی مایوس نہیں کرتے، مگر اس بار شبانہ اعظمیٰ نے بہت زیادہ مایوس کیا’۔

آرٹس کونسل میں 23 اور 24 فروری کو کیفی اعظمیٰ کے صد سالہ یوم پیدائش کے حوالے سے کانفرنس ہورہی ہے جس میں پاکستان اور دنیا کے دیگر حصوں سے تعلق رکھنے والے متعدد معروف شاعر اور ادبی شخصیات شرکت کریں گی۔

جاوید اختر اور شبانہ اعطمیٰ نے رواں ماہ کے آغاز میں اس ایونٹ میں شرکت کی تصدیق کی تھی۔

تاہم جمعے کو اس جوڑے نے مختلف ٹوئیٹس میں پلوامہ حملے کے بعد اس مجوزہ دورے کو منسوخ کرنے کا اعلان کیا۔

شبانہ اعظمیٰ نے ایک ٹوئیٹ میں لکھا ‘ اتنے برسوں میں پہلی بار میں اپنے اس یقین کو کمزور محسوس کررہی ہوں کہ لوگوں کا ایک دوسرے سے تعلق اسٹیبلشمنٹ کو درست اقدامات کرنے پر مجبور کرتا ہے، ہمیں ثقافتی تبادلے کو روکنے کی ضرورت ہے’۔

ان کے شوہر کا ردعمل اس سے بھی زیادہ سخت تھا۔

کراچی آرٹس کونسل کے صدر نے نہ صرف اس جوڑے کے موقف کی مذمت کی بلکہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے واقعات پر سوالات بھی اٹھائے۔