انٹر ٹینمنٹ

صنم ماروی کے خلاف پڑوسن کے گھر پر قبضے کا مقدمہ درج

لاہور: گلوکارہ صنم ماروی کے خلاف پڑوسی کے گھر پر قبضہ کرنے کی دھمکیاں دینے پر مقدمہ درج کر لیا گیا۔

گلوکارہ صنم ماروی کے خلاف پڑوسی خاتون رفعت جمال نے لاہور کے تھانہ جوہر ٹاؤن میں درخواست دائر کی ہے۔  خاتون کی جانب سے درخواست کے متن میں یہ موقف پیش کیا گیا کہ صنم ماروی میرے گھر پر قبضہ کرنے کی دھمکیاں دے رہی ہیں اور اس حوالے سے وہ متعدد بار ان کے ساتھ جھگڑا بھی کر چکی ہے۔

درخواست کے متن میں یہ بھی کہا گیا کہ صنم ماروی نشے کی حالت میں دو بار حملہ آور ہوئی ہیں جس کا اہل محلہ بھی گواہ ہیں۔ جب کہ اس حوالے سے پولیس کا کہنا ہے کہ مزید کارروائی کے لئے کیس وومن پولیس اسٹیشن منتقل کر دیا ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل بھی صنم ماروی کا اپنی ایک اور پڑوسن  سابق ماڈل نائرہ سے بھی جھگڑا ہوا تھا تب انہوں نے اپنے ہی شوہر پر پڑوسن سے تعلقات کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان کے شوہر حامد کا پڑوس میں آنا جانا ہے تاہم اس دوران جھگڑا اتنی سنگین صورتحال اختیار کر گیا تھا کہ بات پولیس تھانے تک آن پہنچی تھی۔

احسن خان چائلڈ پروٹیکشن بیورو کے خیرسگالی سفیرمقرر

 لاہور: اداکار و میزبان اداکار احسن خان کو چائلڈ پروٹیکشن بیورو کا خیر سگالی سفیر مقررکر دیا گیا۔

بچوں کے عالمی دن کی مناسبت سے چائلڈپروٹیکشن بیورولاہورمیں مقامی این جی او کی معاونت سے تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں صوبائی وزیراطلاعات پنجاب میاں اسلم اقبال سمیت اداکاراحسن خان اور گلوکارعلی ظفرنے بھی شرکت کی  جہاں مہمانوں نے بچوں میں تحائف تقسیم کئے۔

تقریب میں احسن خان کو چائلڈ پروٹیکشن بیورو کا خیر سگالی سفیر مقرر کیا گیا تاہم اس حوالے سے احسن خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمیشہ ایسا لگا کہ بچوں کیلئے کوئی کام نہیں ہورہا،خواہش ہے کہ بچوں کیلئے بھی کوئی پروگرام منعقد ہوں اور اس ضمن میں بچوں کی رہنمائی کیلئے حکومت کو ٹھوس اقدامات کرنے چاہیئے۔ کیوں کہ بچوں کے ساتھ بدسلوکی کو روکنا بہت ضروری ہے۔

دوسری جانب تقریب میں موجود علی ظفر نے بھی بچوں کے تحفظ کے حوالے سے کہا کہ ہر کام کو کرنے کیلئے خود پر یقین ہونا بہت ضروری ہے، بچوں کے ساتھ بدسلوکی کے واقعات کو روکنا بھی وقت کی ضرورت ہے۔ انہوں نے بچوں کو حفاظت کی تلقین کرتے ہوئے یہ بھی کہا کہ والدین کے علاوہ کوئی شخص پاس آئے تو شور مچائیں۔

ہالی ووڈ اینی میٹڈ فلم ’فروزن ٹو‘ کا رنگا رنگ پریمیئر

لندن: ہالی ووڈ اینی میٹڈ فلم ’فروزن ٹو‘ کا رنگا رنگ پریمیئر شو لندن میں منعقد ہوا جہاں فلمی ستاروں سے محفل جگمگا اُٹھی۔

مشہور فلم ’فروزن‘ کی کامیابی کے بعد فلم کا پارٹ ٹو بھی ریلیز کے لیے پیش کردیا گیا۔

Frozen 2 Premier 3

فلم کی کامیابی کے حوالے سے رنگا رنگ پریمیئر شو منعقد ہوا جہاں فلم کی کاسٹ نے ریڈ کارپٹ پر جلوے بکھیرے۔ مداح اپنے پسندیدہ ستاروں کو دیکھ کر بے حد خوش ہوئے۔

Frozen 2 Premier 6

Frozen 2 Premier 7

Frozen 2 Premier 4

فلم کی کہانی چار ایلسا،  اینا، اُولف اور کرسٹوف پر مشتمل ہے جوکہ اپنی سلطنت کے قدیم راز جاننے کے لیے ایک ایڈونچر پر نکل پڑتے ہیں۔

Frozen 2 Premier 5

Frozen 2 Premier 2

واضح رہے کہ  سال 2013ء میں ریلیز ہونے والی مشہور اینی میٹڈ فلم فروزن کا سیکوئل فروزن ٹو پاکستان سمیت مختلف ممالک میں 22 نومبر کو ریلیز کیا جائے گا۔

 

اپنی شہرت اور نام استعمال کرکے دین کی خدمت کرنا چاہتا ہوں، حمزہ علی عباسی

اداکار حمزہ علی عباسی  کا کہنا ہے کہ وہ اپنی شہرت، مقبولیت اور نام کو استعمال کرکے دین کی خدمت کرنا چاہتے ہیں۔

حال ہی میں حمزہ علی عباسی نے وائس امریکا کو انٹرویو دیتے ہوئے اداکاری چھوڑنے اور دین کی راہ اپنانے سے متعلق کھل کر گفتگو کی اور اپنے مستقبل کے منصوبوں سے بھی آگاہ کیا۔ میزبان نے حمزہ علی عباسی سے پوچھا کہ سوشل میڈیا پر جہاں ان کے اس فیصلے کو سراہا جارہا ہے وہیں کچھ لوگ تنقید کرتے ہوئے کہہ رہے ہیں کہ آپ نے یہ سب  سستی شہرت کے لیے کیا ہے۔

میزبان کے اس سوال پر حمزہ علی عباسی نے ہنستے ہوئے جواب دیا کہ اگر مجھے پبلسٹی چاہیے ہوتی تو میرے خیال میں سب سے اچھا میڈیم تو ایکٹنگ ہی تھا اوراگر میں نے یہ سب صرف پبلسٹی کے لیے کیا تو میں بہت بڑا بیوقوف ہوں۔ بعد ازاں حمزہ علی عباسی نے کہا کہ اداکاری کے دوران انہیں اللہ تعالیٰ نے بہت شہرت سے نوازا اور ان کے تمام پراجیکٹ سپرہٹ ثابت ہوئے لہٰذا شہرت تو ان کے پاس پہلے سے موجود تھی۔

حمزہ علی عباسی نے کہا جو لوگ میرے بارے میں ایسا سوچتے ہیں میں انہیں الزام نہیں دوں گا بلکہ میں امید کرتا ہوں کہ وقت کے ساتھ انہیں احساس ہو کہ میں نے یہ راستہ پبلسٹی کے لیے اختیار نہیں کیا۔ دین کی راہ اپنانے کا مقصد یہ تھا کہ مجھے احساس ہوگیا ہے کہ موت کے بعد ہر انسان کی جواب دہی ہونی ہے جس کے بعد ہمیشہ کے لیے قائم رہنے والی دنیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں پچھلے ڈھائی سال سے صحیح طرح سو نہیں پایا یہ سوچ کرکہ میری آخرت میں جواب دہی ہونی ہے۔

میزبان کی جانب سے پوچھے جانے والے سوال کہ آپ نے دین کی خدمت کے لئے تبلیغ کا راستہ ہی کیوں اپنایا جس پر حمزہ نے کہا انسانیت کی خدمت کرنا ہر انسان پر فرض ہے اور اسلام کا اولین کا تقاضہ یہ ہے کہ مخلوق کی خدمت کی جائے اور میں نے ہمیشہ انسانیت کی خدمت کی ہے اور آگے بھی کروں گا۔ اور جہاں جہاں میں اپنے نام، اپنی شہرت کو استعمال کرسکتا ہوں دین کی خدمت کے لیے استعمال کروں گا۔

حمزہ علی عباسی نے کہا کہ لوگ ہمیشہ باہر تبلیغ کرنے جاتے ہیں اور کہتے ہیں اسلام پھیلانا ہے لیکن مجھے احساس ہوا کہ ہمارے گھر میں ہمارے اندر کچھ مسائل ہیں جن پر بات کرنے کو بھی بڑا خطرناک سمجھاجاتاہے۔ ہمارے ملک میں لوگ اسلام سے اور حضرت محمد ﷺ سے بے حد محبت کرتے ہیں اور دین کے لیے جان دینے کے لیے ہر وقت تیار رہتے ہیں۔ لیکن بدقسمتی سے ہمارے ملک میں کچھ ایسے عناصر بھی موجود ہیں جو لوگوں کے ان جذبات کو غلط راستے پر ڈال کر استعمال کرتے ہیں۔ لہٰذا ہمارے ملک میں ایسے لوگوں کی ضرورت ہے جو لوگوں کو دین کے بارے میں صحیح راہ دکھائیں۔

حمزہ علی عباسی نے کہا بہت سے لوگ میرے نظریات کی وجہ سے کہتے ہیں کہ آپ کی زندگی زیادہ لمبی نہیں ہوگی جس پر میں کہتا ہوں کہ اس سے بڑی تو سعادت ہی کو ئی نہیں ہوگی کہ میں اللہ کی باتیں کرتے کرتے دنیا سے چلاجاؤں اسے تو شہادت کہتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ میں نے یہ راستہ اس لیے چنا کہ ہمارے ملک میں لوگ عقل کے بجائے جذبات سے سوچتے ہیں لہذا میں وہ عزت جو اللہ نے مجھے دی ہے اسے استعمال کرکے لوگوں میں شعور پھیلاؤں گا۔ انسانیت کی خدمت اورلوگوں کے مذہب کے حوالے سے پوچھے جانے والے سوالوں کے جواب دینے کے لیے میں نے یہ راستہ اختیار کیا اور شاید اسی کی وجہ سے مجھے آخرت میں تھوڑا اطمینان حاصل ہوگا۔

ماضی میں ’’می ٹو‘‘ پر کی گئی ٹویٹ پر حمزہ علی عباسی نے کہا کہ ہمارے دین میں مَردوں کو نگاہیں نیچی رکھنے کا حکم ہے خواتین نے چاہے کیسا بھی لباس پہنا ہو مَردوں کو چاہیے کہ وہ اپنی نگاہوں میں شرم پیدا کریں اور اپنی نگاہیں نیچی رکھیں۔

انٹرویو کے آخر میں حمزہ علی عباسی نے کہا دین ایک پیغام کا نام ہے کہ یہ موت زندگی کے اختتام کا نام نہیں ہے۔ بلکہ ابدی زندگی اس کے بعد شروع ہوتی ہے اور میرا کردار صرف اتنا ہے کہ میں جتنا اس چیز کو پھیلاسکوں پھیلاؤں۔ دوسری بات ہماری نوجوان نسل جو لادینیت کی طرف جارہی ہے ان کے سوالات کے جوابات دینے کی کوشش کرسکوں اور تیسری بات یہ کہ میرے نزدیک ہمارے معاشرے میں مذہب کے حوالے سے جو غلط تصورات آگئے ہیں ان کے بارے میں بات کرسکوں۔

حمزہ علی عباسی نے کہا  فلم ڈراما، پینٹنگ یہ حرام نہیں،حرام بدکاری ہے، ماضی میں میں نے فلم ’’جوانی پھر نہیں آنی‘‘ میں کام کیا جس میں یہ چیز شامل تھی اور جس کے لیے میں معافی مانگ چکاہوں۔ میں نے اداکاری اس لیے نہیں چھوڑی کہ یہ حرام  ہے بلکہ اس لیے چھوڑی ہے کہ لوگ مجھے بطور مذہبی ایکٹیوٹسٹ سنجیدگی سے لیں۔ حمزہ علی عباسی نے مزید کہا کہ وہ مستقبل میں ڈراما اور فلم کی ہدایت کاری دیں گے اور اس میڈیم کے ذریعے اسلام کی جتنی خدمت کرسکتے ہیں کریں گے۔

’اسٹیج پر شائقین کے سامنے یوٹیوب کامیڈین نے نامناسب حرکتیں کیں‘

پاکستان میں ٹرانس جینڈر افراد کے حقوق کے لیے سرگرم سماجی کارکن اور مخنث اسٹینڈ اپ کامیڈین، لکھاری و ریسرچر انایا شیخ نے دعویٰ کیا ہے کہ انہیں اسٹیج پر پرفارمنس کے دوران ساتھی یوٹیوب کامیڈین نے جنسی طور پر ہراساں کیا۔

انایا شخ نے ڈان امیجز سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ انہیں 17 نومبر کو لاہور میں منعقد کیے جانے والے ایک کامیڈی شو کے دوران ساتھی اسٹارز نے نہ صرف ہراساں کیا بلکہ ان کے حوالے سے جنسی طور پر نامناسب فقرے بھی کہے گئے۔

۔
۔

انایا شیخ نے بتایا کہ یوٹیوب چینل ’لاہوری پرانک اسٹار‘ کی انتظامیہ کی جانب سے منعقد کیے گئے کامیڈی شو کے دوران انہیں منتظمین میں شامل یوٹیوب کامیڈین شارق شاہ اور عثمان نے تضحیک کا نشانہ بنایا۔

انایا شیخ نے الزام عائد کیا کہ جب وہ پرفارمنس کے لیے اسٹیج پر پہنچیں تو شارق شاہ نے ان کا لباس دیکھتے ہی انہیں صنفی تنقید کا نشانہ بنایا اور ان کی جنس پر نامناسب لطیفے کسے۔

ان کے مطابق انہوں نے جو ٹی شرٹ پہن رکھی تھی اس پر ’فیمنزم‘ کے حوالے سے ایک جملہ دیکھ کر شارق شاہ نے انہیں ’کُھسرا اور شی میل‘ بلانا شروع کیا۔

انایا شیخ نے دعویٰ کیا کہ شارق شاہ اور عثمان نے انہیں اسٹیج پر سب کے سامنے تضحیک کا نشانہ بنایا جب کہ پرفارمنس کے دوران ایک موقع پر شارق شاہ ان کے بہت قریب بھی آئے۔

انایا شیخ نے پرفارمنس کے وقت پہنے گئے لباس کے ساتھ تصویر بھی ڈان کے ساتھ شیئر کی—فوٹو: انایا شیخ
انایا شیخ نے پرفارمنس کے وقت پہنے گئے لباس کے ساتھ تصویر بھی ڈان کے ساتھ شیئر کی—فوٹو: انایا شیخ

مخنث کامیڈین نے دعویٰ کیا کہ جب انہوں نے اسٹیج سے جانا چاہا تو دونوں کامیڈین نے انہیں انگلیوں سے نامناسب اشارے بھی کیے جس وجہ سے انہیں ذہنی اذیت پہنچی اور ان کا حوصلہ پست ہوا۔

انایا شیخ کے مطابق اگرچہ شائقین نے ان کی پرفارمنس کو سراہا تاہم ساتھ کامیڈین نے انہیں ہراساں کرنے سمیت تضحیک کا نشانہ بنایا اور ان کے پاس اس سارے معاملے کی ویڈیوز بھی موجود ہیں، تاہم وہ انہیں سامنے لاکر خود کو لوگوں کی نظروں میں مزید گرانا نہیں چاہتیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سماج میں اب بھی شارق شاہ اور عثمان جیسی ذہنیت کے لوگ موجود ہیں جو انسانوں کو ان کی جنس کی بنیاد پر تضحیک کا نشانہ بناتے ہیں۔

واقعے کے بعد اگرچہ شو منعقد کرنے والے منتظمین نے آفیشل انسٹاگرام پر انایا شیخ سے ہونے والے واقعے کی مذمت کی اور کہا کہ منتظمین کسی کو بھی کسی دوسرے شخص کو جنس کی بنیاد پر تضحیک کا نشانہ بنانے کی اجازت نہیں دیتے۔

منتظمین نے انایا شیخ کے ساتھ پیش آنے والے واقعے کی مذمت کی اور افسوس کا اظہار بھی کیا، تاہم مخنث ماڈل کے مطابق منتظمین میں سے کچھ افراد کو اس بات کا علم اسی وقت ہی تھا، تاہم انہوں نے اس وقت کچھ نہیں کیا۔

ماڈل سمارا چوہدری ’سائبر کرائم‘ کا نشانہ بن گئیں، ذاتی ویڈیوز لیک

گلوکارہ و اداکارہ رابی پیرزادہ کے بعد ایک اور پاکستانی ماڈل بھی عالمی ہیکرز کا نشانہ بن گئیں، ہیکرز نے ابھرتی ہوئی ماڈل سمارا چوہدری کی متعدد ذاتی ویڈیوز کو لیک کردیا۔

سمارا چوہدری کی ویڈیوز ایک ایسے وقت میں لیک ہوئی ہیں جب کہ تین ہفتے قبل ہی اداکارہ و گلوکارہ رابی پیرزادہ کی ذاتی ویڈیوز لیک کی گئی تھیں۔

اگرچہ ابھی تک یہ واضح نہیں ہوسکا کہ رابی پیرزادہ کی ویڈیوز کس نے لیک کی تھیں، تاہم اداکارہ نے خود عندیہ دیا تھا کہ ممکنہ طور پر ان کی ویڈیوز کو فروخت کیے گئے موبائل سے ری کور کرکے لیک کیا گیا ہوگا۔

رابی پیرزادہ نے ویڈیوز لیک ہونے کے بعد شوبز کو چھوڑ کر اسلامی تعلیمات کے مطابق زندگی گزارنے کا اعلان کیا تھا جب کہ وفاقی تحقیقاتی ادارے ’ایف آئی اے‘ نے ان کی ویڈیوز کو عام کرنے والے 2 افراد سے پوچھ گچھ کے بعد انہیں کڑی نگرانی میں بھی رکھا تھا۔

سمارا چوہدری مختصر اشتہارات کرتی آئی ہیں—فوٹو: ٹوئٹر
سمارا چوہدری مختصر اشتہارات کرتی آئی ہیں—فوٹو: ٹوئٹر

لیکن اب ان کے بعد ابھرتی ہوئی ماڈل سمارا چوہدری کو بھی ہیکرز نے نشانہ بنایا ہے اور ان کی متعدد ذاتی ویڈیوز کو لیک کردیا گیا ہے۔

سمارا چوہدری کی لیک ہونے والی نامناسب ویڈیوز کے حوالے سے یہ واضح نہیں ہوسکا کہ وہ کیسے لیک ہوئیں۔

تاہم گلف نیوز نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ ممکنہ طور پر سمارا چوہدری کی ویڈیوز ہیکرز کے ایک عالمی گروپ نے لیک کی ہوں گی۔

رپورٹ میں ایک عالمی نیوز ویب سائٹ کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ ہیکرز کا عالمی گروہ پنجاب کے شہر لاہور میں متحرک ہو چکا ہے اور وہ متعدد شوبز شخصیات کی نامناسب اور ذاتی ویڈیوز لیک کرنے کا منصوبہ بن چکا ہے۔

رپورٹ کے مطابق رابی پیرزادہ کے بعد سمارا چوہدری بھی ان ہی ہیکرز کا نشانہ بنی ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ ہیکرز کا مذکورہ گروہ پاکستانی اداکاراؤں و ماڈلز کے ذاتی ویڈیوز کو ہیک کرکے مبینہ طور پر فحش مواد چلانے والی ویب سائٹ کو بھی فروخت کر رہا ہے۔

سمارا چوہدری کی ویڈیوز لیک ہونے کے بعد تاحال ماڈل نے کوئی بیان نہیں دیا اور نہ ہی ان کی ویڈیوز کو پھیلانے والے افراد کے خلاف کارروائی کے حوالے سے پولیس یا وفاقی تحقیقاتی ادارے کا کوئی بیان سامنے آ سکا ہے۔

لیک ہونے والی سمارا چوہدری کی مذکورہ ذاتی ویڈیوز کے حوالےسے خیال کیا جا رہا ہے کہ انہیں گزشتہ برس لاہور کے کسی ہوٹل میں ریکارڈ کیا گیا تھا۔

سمارا چوہدری ابھرتی ہوئی ماڈلز ہیں اور وہ کیٹ واک سمیت چند اشتہارات میں مختصر طور پر دکھائی دی ہیں۔

ویڈیوز کے حوالے سے تفتیشی اداروں نے بھی کوئی بیان نہیں دیا—فوٹو: ٹوئٹر
ویڈیوز کے حوالے سے تفتیشی اداروں نے بھی کوئی بیان نہیں دیا—فوٹو: ٹوئٹر

بھارت کے سب سے بڑے شو سے آفر آنے پر حیران تھی: آئمہ بیگ

دو سال قبل ’مس ورلڈ‘ منتخب ہونے والی بھارتی دوشیزہ منوشی چھلر کے حوالے سے گزشتہ برس ہی یہ چہ مگوئیاں شروع ہوگئی تھیں کہ وہ بھی فلمی دنیا میں انٹری دیں گی۔

اگرچہ مس ورلڈ کا اعزاز چھنتے ہی منوشی چھلر کچھ میگزین کے سرورق پر دکھائی دیں تھیں، تاہم انہوں نے فلموں میں انٹری کا عندیہ نہیں دیا تھا۔

رواں برس مئی میں یہ خبر سامنے آئیں کہ منوشی چھلر بولی وڈ میں انٹری دینے کے لیے راضی ہوگئی ہیں اور وہ ممکنہ طور پر اکشے کمار کی ہیروئن بن کر اداکاری کی شروعات کریں گی۔

اور اب اس بات کی تصدیق کردی گئی کہ منوشی چھلر بولی وڈ کھلاڑی اکشے کمار کی ہیروئن بن کر فلمی کیریئر کا آغاز کریں گی۔

منوشی چھلر نے بھی اکشے کمار اور فلم کے ہدایت کار کے ساتھ تصویر سوشل میڈیا پر شیئر کی—فوٹو: انسٹاگرام
منوشی چھلر نے بھی اکشے کمار اور فلم کے ہدایت کار کے ساتھ تصویر سوشل میڈیا پر شیئر کی—فوٹو: انسٹاگرام

ہندوستان ٹائمز کے مطابق منوشی چھلر تاریخی فلم ’پرتھوی راج‘ سے فلمی کیریئر کا آغاز کریں گی۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ ’پرتھوی راج‘ کی ٹیم نے اس بات کی تصدیق کردی کہ منوشی چھلر کو بطور ہیروئن کاسٹ کرلیا گیا ہے جب کہ خود دوشیزہ نے بھی فلم میں کاسٹ کیے جانے پر خوشی کا اظہار کیا۔

’پرتھوی راج‘ ہندوؤں کے سابق بادشاہ پرتھوی راج چوہان کی زندگی پر بنائی جانے والی تاریخی فلم ہوگی، جس میں اکشے کمار ہندو بادشاہ کے روپ میں دکھائی دیں گے۔

پہلے ہی چہ مگوئیاں تھیں کہ منوشی چھلر بھی شوبز میں انٹری دیں گی—فوٹو: انسٹاگرام
پہلے ہی چہ مگوئیاں تھیں کہ منوشی چھلر بھی شوبز میں انٹری دیں گی—فوٹو: انسٹاگرام

منوشی چھلر فلم میں اکشے کمار یعنی پرتھوی راج چوہان کی بیوی شہزادی سنیوگیتا کا کردار ادا کرتی دکھائی دیں گی۔

یش راج چوپڑا کے بینر تلے بننے والی اس فلم کی ہدایات چندرپرکاش دویدی دیں گے۔

اکشے کمار نے اپنی 52 ویں سالگرہ پر ستمبر میں ہی اس فلم کے ٹائٹل ٹیزر کو شیئر کرتے ہوئے بتایا تھا کہ ’پرتھوی راج‘ کو 2020 میں دیوالی کے موقع پر ریلیز کیا جائے گا۔

,

دلچسپ بات یہ ہے کہ جہاں منوشی چھلر بولی وڈ کھلاڑی کی ہیروئن بن کر اپنے فلمی کیریئر کا آغاز کرنے جا رہی ہیں، وہیں سابق حسینہ لارا دتا نے بھی اکشے کمار کی ہیروئن بن کر فلمی کیریئر کا آغاز کیا تھا۔

یہی نہیں بلکہ سابق مس ورلڈ پریانکا چوپڑا کو بھی اکشے کمار کی فلم ’انداز‘ سے شہرت ملی تھی جو کہ پریانکا چوپڑا کی دوسری فلم تھی۔

منوشی چھلر سے قبل سابق حسینائیں لارا دتا اور پریانکا بھی سب سے پہلے اکشے کے ساتھ کام کر چکی ہیں—پرومو فوٹو
منوشی چھلر سے قبل سابق حسینائیں لارا دتا اور پریانکا بھی سب سے پہلے اکشے کے ساتھ کام کر چکی ہیں—پرومو فوٹو

بالی ووڈ اداکارہ روینا ٹنڈن پاکستانی ہیرو کی تعریف کیے بغیر رہ نہ سکیں

بالی وڈ کی اداکارہ روینا ٹنڈن بھارت سے اومان جانے والی پرواز کو حادثے سے بچانے والے پاکستانی ہیرو کے اقدام کو سراہے بغیر رہ نہ سکیں۔

اداکارہ نے مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹوئٹر پر اس حوالے سے ایک ٹوئٹ بھی کیا۔

بالی ووڈ اداکارہ روینا ٹنڈن نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا کہ ’جب انسانیت سیاست سے جیت جائے‘

Raveena Tandon

@TandonRaveena

When humanity wins over politics . Pakistani air traffic controller saves a Jaipur to Muscat flight from disaster https://www.livemint.com/news/world/pakistani-air-traffic-controller-saves-a-jaipur-to-muscat-flight-from-disaster-11573872117945.html 

Pakistani air traffic controller saves a Jaipur to Muscat flight from disaster

Sources in the aviation authority said that the aircraft had encountered abnormal weather conditions near the Chor area of the southern province of Sindh.Islamabad has, for more than a month,…

livemint.com

5,237 people are talking about this

روینا ٹنڈن نے اپنے ٹوئٹ میں وضاحت کرتے ہوئے لکھا کہ ’پاکستانی ائیر ٹریفک کنٹرولر نے جےپور سے مسقط جانے والی پرواز کو تباہ ہونے سے بچا لیا‘

واضح رہے کہ چند روز قبل پاکستان سول ایویشن اتھارٹی کے ایک ائیر ٹریفک کنٹرولر نے بھارت سے اومان جانے والے ایک طیارے کو حادثے سے بچا لیا تھا۔

بھارت کے شہر جے پور سے مسقط جانے والے مسافر طیارے میں 150 مسافر سوار تھے اور طیارہ کراچی ریجن کے اوپر سے گزر تے وقت خراب موسم میں پھنس گیا تھا۔ آسمانی بجلی گرنے کی وجہ سے جہاز 36 ہزار فٹ کی بلندی سے یکدم 34 ہزار کی بلندی پر آگیا اور اس دوران پائلٹ نے ایمرجنسی پروٹوکول کے تحت قریبی اسٹیشنز کو”مئےڈے” پیغام بھیج دیا۔

اس موقع پر پاکستان میں ہوا بازی کے نگران سرکاری ادارے سی اے اے کے ائیر ٹریفک کنٹرولر نے فوری طور پر مذکورہ پیغام کا جواب دیا اور جہاز کے کپتان کو پاکستانی فضاء میں موجود شدید فضائی ٹریفک سے نکلنے میں مدد فراہم کی۔

سی اے اے ذرائع کے مطابق جے پور سے مسقط جانے والے جہاز کو شدید خراب موسم کا سامنا سندھ کے علاقے چھور میں کرنا پڑا تھا۔

Google Analytics Alternative