- الإعلانات -

فاٹا آپریشن نےحقانی نیٹ ورک کو بھاگنے پر مجبور کردیا ہے”امریکا”

واشنگٹن: امریکا کے سیکریٹری آف اسٹیٹ جان کیری نے اوباما انتظامیہ کے پاکستان کو ایف-16 طیاروں کی فروخت کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے قبائلی علاقے (فاٹا) میں جاری فوجی آپریشن نے حقانی نیٹ ورک کو دوسرے مقام پر منتقل ہونے پر مجبور کردیا ہے.

خیال رہے کہ امریکی کانگریس میں ہونے والی بحث کے دوران فاٹا میں حقانی نیٹ ورک کی موجودگی کو پاکستان کو طیاروں کی فروخت کے خلاف اہم دلیل کے طور پر پیش کیا گیا تھا۔

امریکی سینیٹر بوب کورکر نے پاکستان کو طیاروں کی فروخت کی مخالفت کرتے ہوئے کہا تھا کہ ‘وہ طالبان اور حقانی نیٹ ورک کی حمایت جاری رکھے ہوئے ہیں اور القاعدہ کو محفوظ پناہ گاہیں فراہم کررہے ہیں’۔

جان کیری نے سینیٹر کے تحفظات کو رد کرتے ہوئے کہا کہ ‘انھوں ںے حقانی نیٹ ورک کو ایک نئے مقام پر منتقل ہونے پر مجبور کردیا ہے۔ اور یہ دہشت گردوں کے خلاف جاری پیش رفت کا حصہ ہے’۔ تاہم انھوں نے اس بات کو تسلیم کیا کہ کچھ ‘عناصر’ اب بھی وہاں موجود ہیں، جو ‘ہماری کوششوں کو مزید پیچیدہ کررہے ہیں’۔

جان کیری امریکی سینیٹ کی کمیٹی برائے خارجہ تعلقات کے سامنے 2017 کے دفاعی بجٹ کے لیے پیش ہوئے تھے، جس میں صوابدیدی فنڈز کے طور پر خارجہ اور امریکی ایجنسی کی بین الاقوامی امداد کے لیے 50 ارب روپے سے زائد کی رقم طلب کی گئی ہے۔

انتظامیہ کی جانب سے پاکستان کے لیے 72 کروڑ 20 لاکھ ڈالر کی مطلوبہ رقم کی تفصیلات بتاتے ہوئے جان کیری کا کہنا تھا کہ ‘ہم انسداد انتہا پسندی کے لیے پاکستان اور افغانستان کو مدد فراہم کررہے ہیں’۔