- الإعلانات -

پاکستان اور بھارت کے درمیان میچ نہیں ہونے دیں گے”بھارتی انتہا پسند گروپ”

نئی دہلی /دھرم شالا: بھارتی انتہا پسند گروپ اینٹی ٹیرارسٹ فرنٹ نے دھمکی دی ہے کہ وہ ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں پاکستان اور بھارت کے درمیان میچ نہیں ہونے دیں گے ، اگر پاکستانی ٹیم میچ کھیلنے آئی تو وہ احتجاجاً گراونڈ کی پچ کو کھود دیں گے۔بھارتی میڈیاکے مطابق انتہاپسند جماعت اینٹی ٹیرارسٹ فرنٹ کے صدر وریندر شندیلیا نے دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ اگر پاکستانی ٹیم بھارت سے میچ کھیلنے کیلئے آئی تو وہ دھرم شالا کے اسٹیڈیم کی پچ کھود دیں گے۔وریندر نے کہا کہ اس بات کے سنگین خدشات موجود ہیں کہ میچ کے دوران پاکستانی دہشت گرد علاقے میں داخل ہو جائیں اور اگر ہماچل پردیش حکومت میچ کی اجازت دیتی ہے تو یہ پٹھان کوٹ میں ہلاک ہونے والوں کی تضحیک اور بے حرمتی ہو گی۔شندیلیا نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے وزیر اعظم نریندر مودی اوروزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کو اس سلسلے میں خط لکھا ہے اور وہ ریاست کے وزیر اعلیٰ ویر بھادرا سنگھ اور قائد حزب اختلاف پی کے دھومل سے بھی ملاقات کریں گے۔انہوں نے کہا کہ آنے والے دنوں میں ہم میچ کے خلاف دھرم شالا میں بڑے پیمانے پر احتجاج بھی کریں گے۔یاد رہے کہ رواں ماہ ہونے آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں 19 مارچ کو دھرم شالا میں پاکستان اور بھارت کے خلاف میچ شیڈول ہے تاہم میچ سے قبل ہی مختلف سطح پر پاکستانی کرکٹ ٹیم کو دھمکیاں دیے جانے کے ساتھ ساتھ ساتھ میچ نہ کھیلنے کا انتباہ جاری کیا گیا ہے۔یہ پہلا موقع نہیں کہ پاکستانی ٹیم کے دورے کے موقع پر اسے سنگین نتائج کی دھمکیاں دی گئی ہوں بلکہ 1999 میں وسیم اکرم کی زیر قیادت بھارت جانے والی پاکستانی ٹیم کا استقبال کچھ اس انداز سے ہوا تھا کہ دورے کے مخالف شدت پسندوں نے انڈین کرکٹ بورڈ(بی سی سی آئی) کے دفتر میں توڑ پھوڑ کرتے ہوئے دہلی کے فیروز شاہ کوٹلہ گراونڈ کی پچ کھود دی تھی اور پاکستانی کرکٹرز کو سنگین نتائج بھگتنے کی دھمکیاں بھی دی گئی تھیں۔پاکستانی ٹیم کی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں شرکت اس وقت مشکوک ہو گئی تھی جب ریاست ہماچل پردیش کے وزیر اعلیٰ نے ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں پاکستان اور بھارت کے درمیان میچ میں پاکستانی ٹیم کو سیکیورٹی فراہم کرنے سے معذرت کر لی تھی۔وزیر اعلیٰ ہماچل پردیش ویربہادرا سنگھ نے اتوار کو اپنے بیان میں کہا تھا کہ ہم میچ میں سیکیورٹی دینے کے لیے تیار نہیں ہیں۔وزیر اعظم نوازشریف نے اس صورتحال کا نوٹس لیتے ہوئے ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں شرکت کیلئے پاکستانی ٹیم بھیجنے سے قبل سیکیورٹی معاملات کا جائزہ لینے کیلئے وفد بھارت بھیجنے کا حکم دیا تھا۔