- الإعلانات -

چینی سرمایہ کاری سے پاکستان میں تقریبا 10ہزار افراد کو نیا روزگار ملے گا،گان رانگکن

اسلام آباد :  چین کے ایک 15رکنی وفد نے چین کے صوبے ہوبے کے نائب گورنر گان رانگکن کی قیادت میں اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کا دورہ کیا اور تاجر برادری کے ساتھ تبادلہ خیال کرتے ہوئے ون بیلٹ ون روڈ اور چین پاکستان اقتصادی راہداری منصبوں میں سرمایہ کاری اور جوائنٹ وینچرز قائم کرنے کے امور پر تبادلہ خیال کیا۔ وفد نے پاکستان میں بجلی کی پیداوار، سڑکوں، ایئرپورٹس اور ریلوے نیٹ ورک کی تعمیر سمیت دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری کرنے میں گہری دلچسپی کا اظہار کیا۔ گان رانگکن نے کہا کہ پاکستان اور چین کے مابین توانائی، انفراسٹرکچر کی ترقی، آٹو موبائل، سٹیل، سیمنٹ اور سروس انڈسٹری سمیت دیگر شعبوں میں تعاون کو فروغ دینے کے عمدہ مواقع موجود ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سیاسی استحکام اور بہتر ہوتی ہوئی معیشت کی وجہ سے چین کے سرمایہ کاروں کی پاکستان میں سرمایہ کاری اور کاروباری شراکتوں میں دلچسپی بڑھتی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ چین کی سٹیٹ کنسٹرکشن کارپوریشن پہلے ہی پاکستان میں سینٹارس اور نیو اسلام آباد ایئرپورٹ کی تعمیر سمیت مختلف منصوبوں میں حصہ لے چکی ہے جبکہ چین کے سرمایہ کار اسلام آباد کو دیگر شہروں سے منسلک کرنے کیلئے 392کلومیٹر سپر ہائی وے اور پاکستان میں انڈسٹریل پارک کی تعمیر سمیت دیگر منصوبوں میں سرمایہ کاری کیلئے کوششوں میں مصروف ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان منصوبوں میں چین کی سرمایہ کاری سے پاکستان میں تقریبا 10ہزار افراد کو نیا روزگار ملے گا۔ نائب گورنر نے کہا کہ چین کا صوبہ ہوبے صنعتی شعبے میں کافی مضبوط ہے ، اس کے پاس ایڈوانس ٹیکنالوجی موجود ہے اور جدید ٹرانسپورٹ نظام کو ترقی دینے کی عمدہ مہارت پائی جاتی ہے۔ لہٰذا ان کا صوبہ پاکستان کے ساتھ تجارتی وصنعتی تعاون کو مزید مضبوط کرنا چاہتا ہے تا کہ دونوں ممالک کے عوام کیلئے فائدہ مند نتائج حاصل کئے جا سکیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی تاجر برادری بھی چین کے صوبے ہوبے کا دورہ کرکے اپنے لئے کاروبار کے نئے مواقع تلاش کرے کیونکہ ان کا صوبہ چین کے مرکز میں واقع ہے جہاں کاروبار کو فروغ دینے کے وسیع مواقع پائے جاتے ہیں۔اپنے استقبالیہ خطاب میں اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر عاطف اکرام شیخ نے کہا کہ پاکستان کا خوشحال مستقبل چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے سے وابستہ ہے لہذا چین کے زیادہ سے زیادہ سرمایہ کار وں کو اس اہم منصوبے میں سرمایہ کاری کرنے کی حوصلہ افزائی کی جائے تا کہ یہ تاریخی منصوبہ بروقت مکمل ہونے سے پاکستان میں ترقی کا ایک نیا دور شروع ہو۔ انہوں نے وفد کو بتایا کہ توانائی، انفراسٹریکچر کی ترقی، معدنیات، مینوفیکچرنگ، انجینئرنگ، انفارمیشن ٹیکنالوجی اور کمیونیکیشن سمیت پاکستان کی معیشت کے دیگر شعبوں میں غیر ملکی سرمایہ کاری کے عمدہ مواقع پائے جاتے ہیں جبکہ چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے کی وجہ سے سرمایہ کاری کے مواقعوں کا ایک نیا دور شروع ہو گا۔انہوں نے کہا کہ چین کے پاس اقتصادی ترقی کیلئے جدید ٹیکنالوجی اور مہارت پائی جاتی ہے جبکہ پاکستان کی موجودہ حکومت سرمایہ کاروں کو پرکشش مراعات فراہم کر رہی ہے لہذا انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ چین کے سرمایہ کار پاکستان میں سرمایہ کاری بڑھا کر ان مراعات سے بھرپور استفادہ حاصل کریں۔ انہوں نے کہا کہ یقین دہانی کرائی کہ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری چین کے سرمایہ کاروں کو پاکستان میں کاروبار کے مواقع تلاش کرنے میں ہرممکن تعاون فراہم کرے گا۔ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب صدر شیخ پرویز احمد اور نائب صدر شیخ عبدالوحید نے بھی اپنے خطاب میں چین کے سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کے فوائد سے آگاہ کیا۔