- الإعلانات -

نیشنل ایکشن پلان کے 20 نکات پر عمل درآمد نہ ہونے کا سخت نوٹس

سیاسی وعسکری قیادت نے امن وامان کی صورت حال بہتر بنانے کیلئے نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عمل درآمد نہ ہونے کا سخت نوٹس لیتے ہوئے ،مدارس اصلاحات،دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے اور نیکٹا کوفوری فعال کرنے کی ہدایات جاری کردی ہیں۔ وزیراعظم نواز شریف کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس میں ملکی سلامتی کی صورت حال اور نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمدکاجائزہ لیاگیا۔ اجلاس میں وزیرداخلہ ، وزیرخزانہ ، آرمی چیف جنرل راحیل شریف،وزیر اعلیٰ پنجاب ، مشیر سلامتی امور سرتاج عزیز اور طارق فاطمی سمیت دیگر حکام شریک ہوئے، اس موقع پرنیشنل ایکشن پلان کے 20 نکات پر مکمل عمل درآمد نہ ہونے کا نوٹس لیاگیا۔ذرائع کا کہناہےکہ نفرت انگیزتقاریر اورلٹریچرکی روک تھام کے لیے موثرپیش رفت نہ ہونے کی نشاندہی کی گئی جبکہ مدارس اصلاحات پربھی واضح پیش رفت نہ ہونے سے متعلق آگاہ کیاگیا ۔نیکٹاکےغیرفعال ہونے کا خصوصی طورپرذکرہوا اور فیصلہ کیاگیاکہ اسے فعال کرنے کیلئے فوری اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ دہشت گردوں کی مالی معاونت کرنے والوں کے خلاف موثرکارروائی نہ ہونے کی نشاندہی پرفیصلہ کیاگیاکہ سویلین اداروں کی استعداد کار بہتر اور انٹیلی جنس نظام کو موثر بنانے کے لیے خصوصی اقدامات اٹھائےجائیں گے۔ وزیراعظم کی زیرصدارت اجلاس میں کراچی آپریشن کسی رکاوٹ کےبغیر جاری رکھنے کافیصلہ کیاگیا، پولیس کو سیاست سے پاک کرکےاس کی جدید خطوط پر تربیت سے متعلق اقدامات کرنے کافیصلہ بھی ہوا۔