- الإعلانات -

مودی سرکار کشمیر پر بات نہ کرنے کی ہٹ دھرمی پر قائم

Sushma-Sorraj

نئی دلی: بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے کہا ہے کہ مذاکرات سے نہیں بھاگ رہے لیکن دونوں ممالک کے قومی سلامتی کے مشیروں کے درمیان مذاکرات میں کشمیر پر بات نہیں ہوگی۔

نئی دلی میں پریس کانفرنس کے دوران بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج کا کہنا تھا کہ بھارت اور پاکستان میں ہونیوالی بات چیت کومذاکرت نہیں کہا جاسکتا، دونوں ممالک کے درمیان 1998 سے جامع مذاکرات شروع ہوئے، وہ مذاکرات 8 نکات پر مشتمل تھے اور اس میں کشمیر بھی شامل ہے۔ اوفا میں جامع مذاکرات کی بحالی نہیں ہوئی، دہشت گردی اور مذاکرات ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے، اوفا میں طے پایا تھا کہ نیشل سیکیورٹی ایڈوائرز کی میٹنگ میں دہشت گردی پر بات چیت ہو گی، دوسری ملاقات میں سرحد پر کشیدگی اور تیسری ملاقات میں جنگ بندی کی خلاف ورزی کے معاملے پر بات ہونا تھی، بھارت نے اوفا معاہدے کے تیرہ دن بعد ہی قومی سلامتی کے مشیروں کی ملاقات کی تجویز بھیج دی تھی، جس میں دلی مذاکرات کے لیے 23 اگست کی تاریخ دی گئی تھی، اگلے ہی روز بھارت نے دونوں ممالک کے ڈی جی ایم اوز کی ملاقات کی لئے بھی مراسلہ بھجوایا لیکن پاکستان نے ڈی جی ایم اوز کی میٹنگ کی تاریخ نہیں دی۔