- الإعلانات -

ترکی میں کار بم دھماکہ، 4 افراد ہلاک ،17سے زائد زخمی

کردستان ورکرز پارٹی کے ساتھ جھڑپوں میں 8 ترک سکیورٹی اہلکار ہلاک، 15عسکریت پسند بھی مارے گئے
دھماکہ اس وقت ہوا جب چوری شدہ گاڑی میں دھماکہ خیز مواد لادا جارہا تھا جو قبل از وقت پھٹ گیا، زخمیوں میں 5 فوجی اہلکار اور3 شہری شامل ہیں،سیکورٹی حکام.
انقرہ ترکی میں کار بم دھماکے میں 4 افراد ہلاک اور17سے زائد زخمی ہوگئے جبکہ کالعدم کردستان ورکرز پارٹی کے ساتھ جھڑپوں میں 8 ترک سکیورٹی اہلکار ہلاک ہو گئے جبکہ 15عسکریت پسند بھی مارے گئے ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق ترکی میں کار بم دھماکے میں 4 افراد جاں بحق اور17سے زائد زخمی ہوگئے۔دھماکا عسکری تنصیبات کے قریب ہوا، وزارت داخلہ کے مطابق دھماکہ خیز مواد پھٹنے چار مشتبہ کرد باغی سے ہلاک ہوگئے ہیں۔ترکی کے ضلع ساریکمیش میں اس وقت دھماکہ ہوا کہ جب ایک چوری شدہ گاڑی میں دھماکہ خیز مواد لادا جارہا تھا اور وہ قبل از وقت پھٹ گیا۔استنبول کے گورنر کے مطابق زخمیوں میں پانچ فوجی اہلکار اور تین شہری شامل ہیں۔وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ ابتدائی معلومات کے مطابق زخمی ہونے والے عام شہری ہیں۔عینی شاہدین کے مطابق دھماکے کی آواز دیاربکر شہر میں بھی سنی گئی ہے۔باغیوں کے بارے میں قیاس ہے کہ ان کے تعلق کردستان ورکرز پارٹی سے تھا۔دوسری جانب ترک آرمی کی طرف سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ کالعدم کردستان ورکرز پارٹی کے ساتھ جھڑپوں میں ان کے کم از کم8 سکیورٹی اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔ یہ جھڑپیں ملک کے جنوب مشرقی شورش زدہ کرد علاقے میں ہوئی ہیں جبکہ ان میں15 کرد عسکریت پسندوں کی ہلاکت کا دعوی بھی کیا گیا ہے۔ صوبہ حکاری میں پیش آنے والے ان واقعات میں 6 ترک فوجی زخمی بھی ہوئے ہیں۔ نوے کی دہائی سے کرد عسکریت پسند انقرہ حکومت کے خلاف مسلح کارروائیوں کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں اور ابھی تک اس لڑائی میں ہزاروں افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔