- الإعلانات -

برازیل میں 16سالہ لڑکی پر تو قیامت ہی ٹوٹی پڑی سن کے انسانیت شرما جائے

برازیل لاطینی امریکہ کے سب سے بڑے ملک برازیل میں نو عمر لڑکی کے ساتھ ’’ گینگ ریپ‘‘کا ایسا خوفناک واقعہ پیش آیا ہے جس نے پورے ملک کو ہلا کر رکھ دیا ،برازیل کے قائم مقام صدر اور سیکیورٹی حکام نے واقعہ کے بعد ’’سفاک ملزموں ‘‘ کی گرفتاری کے لئے سر جوڑ لئے ۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق برازیل کے شہر ریوڈی جنیرو جہاں دو ماہ بعد ’’اولیمپک گیمز ‘‘ شروع ہونے والی ہیں کہ ایک قصبے میں 16سالہ لڑکی سے 30سے زائد اوباشوں نے مسلسل 36گھنٹے تک ریپ کیا ،سفاک ملزم ریپ کے دوران لڑکی کی ویڈیو اور تصاویر بھی بناتے رہے جسے بعد میں مائیکرو بلاگنگ سائٹ ’’ٹویٹر ‘‘ پر شیئر کر دیں ،لڑکی کو تشویشناک حالت میں ہسپتال منتقل کر کے طبی امداد دی جارہی ہے ۔ہسپتال میں لڑکی نے بیان دیا ہے کہ وہ اپنے بوائے فرینڈ کے گھر رات رکنے کے لئے گئی تھی ،جب صبح سو کر اٹھی تو اس کے ارد گرد 30سے زائد افراد جمع تھے ،ان میں سے کئی کے ہاتھوں میں پسٹل اور رائفلیں بھی تھیں ،انہوں نے مسلسل 36گھنٹوں تک اسے ’’گینگ ریپ‘‘ کا نشانہ بنایا ، اس شدید حادثے کے بعد ہسپتال میں داخل لڑکی گہرے صدمے میں ہے۔16سالہ متاثرہ لڑکی کا کہنا تھا کہ میں چاہتی ہوں کہ خدا انصاف کرے ،میں بہت زیادہ دکھی ہوں ،کیونکہ میں تباہ ہو گئی ہوں ،میرے اوپر ساری زندگی کے لئے ایسا داغ لگ گیا ہے،مجھے ایسا لگتا ہے کہ سب یہی کہہ رہے ہوں کہ یہ سب میری غلطی ہے کیونکہ میں نے مختصر کپڑے پہنے ہوئے تھے ،لیکن میں لوگوں کو کہنا چاہتی ہوں کہ ’’گینگ ریپ ‘‘کا شکار ہونے والی لڑکی کی کوئی غلطی نہیں ہوتی