- الإعلانات -

امریکہ کا وفد اچانک پاکستان روانہ اہم شخصیات سے ملاقاتیں کریں گے

واشنگٹن ایف سولہ کی عدم فراہمی اور بلوچستان میں ڈرون حملے کے بعد پاک امریکہ تعلقات میں کشیدگی اور تناو اپنے عروج کوپہنچ چکا ہے۔ اس کشیدگی پر قابو پانے اور تعلقات میں بہتری لانے کیلئے اوباما انتظامیہ نے دو اعلی عہدیدار پاکستان بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔
ذرائع  کے مطابق امریکی صدر کے مشیر پیٹرلیوئے اور پاکستان وافغانستان کیلئے خصوصی نمائندے رچرڈ اولسن کل پاکستان پہنچیں گے۔امریکی حکام اسلام آباد میں سول اور عسکری قیادت سے ملاقاتیں کریں گے۔ملاقات میں پاک امریکہ تعلقات اور علاقائی امور پر خصوصی بات چیت ہوگی۔
ذرائع کے مطابق پاکستان اور امریکہ کے تعلقات میں کشیدگی پر اوباما انتظامیہ میں تشویش بڑھنے لگی۔اعلیٰ سفارتی ذرائع کے مطابق امریکی وفد اسلام آباد میں چیف آف آرمی اسٹاف جنرل راحیل شریف ، مشیر خارجہ سرتاج عزیز اور وزیراعظم کے نیشنل سیکورٹی ایڈوائزر ناصر خان جنجوعہ سے ملاقات کریں گے۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکی اعلی حکام کے دورے میں پاک امریکہ تعلقات،علاقائی امور پر بات چیت کی جائے گی۔اہم ملاقات میں افغانستان میں قیام امن اور خطے میں استحکام سے متعلق اقدامات پر بھی بات چیت ہوگی۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکی وفد کی وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز شریف سے بھی ملاقات کا امکان ہے۔