- الإعلانات -

ترک فورسز کی کاروائی 11 شامی مہاجرین مار ڈالے

عمان: غیرقانونی طریقے سے ترکی میں داخلے کی کوشش کے دوران ترک فورسز کی فائرنگ سے 11 شامی مہاجرین کو ہلاک ہو گئے۔ہلاک ہونے والے بیشتر افراد کا تعق ایک ہی خاندان سے ہے۔ذرائع  کے مطابق شام میں انسانی حقوق کے حوالے سے کام کرنے والی برطانوی تنظیم کا کہنا تھا کہ شمال مغربی شامی سرحد سے ترکی میں داخل ہونے کی کوشش کرنے والے شامی مہاجرین پر کی جانے والی فائرنگ میں دو خواتین اور 4 بچے بھی ہلاک ہوئے۔برطانوی مانیٹرنگ گروپ کا کہنا تھا کہ انکے پاس رواں سال کے دوران ترک بارڈر گارڈز کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والے 60 شامی مہاجرین کے دستاویزی شواہد موجود ہیں۔ادھر مذکورہ واقعے پر ترک حکام کا مؤقف سامنے نہیں آیا ہے۔خیال رہے کہ شام میں 2011 سے آغاز ہونے والی شورش کے بعد ان علاقوں سے نقل مکانی کرنے والے لاکھوں مہاجرین میں سے 280,000 شامی مہاجرین ترکی کے مختلف کیمپوں میں آباد ہیں تاہم ترکی نے حال ہی میں شام کے ساتھ موجود اپنی سرحدیں بند کردی ہیں۔دوسری جانب انسانی حقوق کی تنظیموں نے ترکی پر زور دیا ہے کہ وہ شام میں جاری کشیدگی کے باعث نقل مکانی کرنے والے شامی شہریوں کے لیے سرحدوں کو انسانی بنیادوں پر کھول دیں۔