- الإعلانات -

انڈونیشیا میں بارش نے تباہی مچا دی 35 افراد جانبحق, اور درجنوں افراد لاپتہ

جکارتہ: انڈونیشیا کے وسطی صوبے جاوا میں شدید بارشوں کے بعد آنے والے سیلاب اور اس کے نتیجے میں لینڈ سلائیڈنگ کی وجہ سے 35 افراد ہلاک اور درجنوں افراد لاپتہ ہوگئے۔

امریکی خبر رساں ادارے ’اے پی‘ کے مطابق گزشتہ ایک ہفتے کے دوران جزیرہ جاوا کے 16 اضلاع اور قصبوں میں سیلاب اور لینڈ سلائیڈنگ کے باعث متعدد مکانات بھی منہدم، جبکہ کئی گھر پانی میں مکمل طور پر ڈوب چکے ہیں۔انڈونیشیا کے نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ ایجنسی کے ترجمان نے بتایا کہ سیلاب سے سب سے زیادہ ضلع پرووریجو متاثر ہوا جہاں 26 افراد اب بھی لاپتہ ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ عالمی سطح پر موسمیاتی تبدیلی کی وجہ سے موسموں میں شدت آگئی ہے اور سماترا اور کالی منتن میں شدید بارشوں کی بھی یہی وجہ ہے۔امدادی ٹیمیں سیلاب میں پھنسے افراد کو نکالنے اور لاپتہ افراد کی تلاش میں مصروف ہیں۔واضح رہے کہ انڈونیشیا میں تقریباً 17 ہزار چھوٹے جزائر ہیں جہاں موسمی بارشوں کی وجہ سے اکثر سیلاب کی صورتحال پیدا ہوجاتی ہے اور لاکھوں لوگ پہاڑی علاقوں یا دریا کے کنارے بھی آباد ہیں جس کی وجہ سے نقصان کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔