- الإعلانات -

خون کے رشتے نہیں بلکہ رشتوں کا خون، باپ نے 3 بچے ایک لاکھ روپے پر فروخت کر دئیے ۔

کوئٹہ : کوئٹہ میں سنگدل باپ نے 3 بچے ایک لاکھ روپے پر فروخت کر دئیے ۔ ماں نے 5 ماہ کی طویل جدوجہد کے بعد بچے کو ڈھونڈ کر تحویل کیلئے عدالت سے رجوع کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق ہزارہ ٹاؤن کے رہائشی عطاء اللہ ہزارہ نے دو سال قبل طاہرہ بی بی سے شادی کی تھی پہلے سال نامعلوم وجوہات کی بناء پر حمل کو ضیاع کردیا تھا جبکہ دوسرے سال دوسرے بچے کی پیدائش ہوئی تو والد نے ایک لاکھ روپے کی خاطر تیسرے روز حاجی شریف ہزارہ نامی شخص پر فروخت کردیا اس دوران جب والدہ نے بچے کا مطالبہ کیا تو شوہر نے مار پیٹ کر والدہ کو گھر سے باہر نکال دیا طاہرہ بی بی جو کہ انتہائی گھرانے سے تعلق رکھتی تھی مختلف گھروں کام کاج کرکے زندگی بسر کررہی تھی اس دوران وہ اپنے بچے کی تلاش میں مسلسل سرگرداں رہی تھی کہ ایک روز حاجی شریف کے گھر میں کام کے دوران انکشاف ہوا کہ انہوں نے پانچ ماہ قبل بچے کو عطاء اللہ نامی شخص سے ایک لاکھ روپے کے عیوض خرید لیا ہے جس پر طاہرہ بی بی نے فوری طور پر شوہر سے بچے کی واپسی کا مطالبہ کیا جس پر شوہر نے اسے شدید زدوکوب کرکے دوبارہ گھر سے نکال دیا اس دوران والدہ نے تھانہ قائد آباد کے رجوع کیا تاہم ایس ایچ او اور حاجی شریف ہزارہ کے ایک دوسرے کی ملی بھگت سے کسی بھی قسم کی کارروائی کرنے سے انکار کردیا آخر کار طاہرہ بی بی نے پیر سید غنی جان آغا ایڈووکیٹ کے توسط سے سیشن کورٹ میں بچے کی واپسی کیلئے درخواست دائر کردی 4 روز گزرنے کے باوجود ایس ایچ او سلیم کے عدم تعاون کے باعث ملزمان عدالت میں پیش نہیں ہوسکے سیشن کورٹ کوئٹہ نے جمعہ کو عطاء اللہ اور محمد شریف کو طلب کرلیا ۔