- الإعلانات -

سندھ بھر میں 3662 مدارس کی جیو ٹیگنگ مکمل.

کراچی : قومی ایکشن پلان کے تحت سندھ بھر میں 3662 مدارس کی جیو ٹیگنگ کو مکمل کرلیا گیا ہے جن میں سے 2122 کراچی اور 1548 حیدرآباد کے تھے۔یہ بات بدھ کو قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد سے متعلق وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کی زیرصدارت وزیراعلیٰ ہاﺅس کراچی میں ہونے والے اجلاس میں سامنے آئی۔اجلاس میں بتایا گیا کہ اس حوالے سے معلومات کے حصول پر کام جاری ہے اور اس کو جلد مکمل کرلیا جائے گا۔صوبائی سیکرٹری داخلہ مختیار احمد سومرو نے بریفننگ دیتے ہوئے بتایا ” صوبے کے کل 9590 مدارس میں سے 6503 کو رجسٹر کرلیا گیا ہے جبکہ 2920 کی رجسٹریشن باقی رہ گئی ہے”۔ان کا کہنا تھا کہ غیر رجسٹرڈ مدارس میں پانچ لاکھ 17 ہزار سے زائد طلباء زیر تعلیم ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا ” مدارس کی جیو ٹیگنگ سے ان کی حقیقی لوکیشن کو جاننے میں مدد ملے گی”۔آئی جی سندھ غلام حیدر جمالی نے وزیراعلیٰ کو بتایا کہ مختلف الزامات کے تحت 167 مدارس کو سیل کیا گیا جبکہ کراچی، حیدرآباد اور بدین کے اکیس مدارس میں غیر قانونی سرگرمیوں کے شبہات پر سرچ آپریشن کیا گیا ” کچھ مدارس سے نفرت انگیز مواد برآمد ہوا اور ان کے خلاف مقدمات رجسٹر کرلیے گئے”۔سیکرٹری داخلہ کا کہنا تھا کہ اب تک سندھ میں 92,646 افغان شہریوں کو رجسٹر کیا جاچکا ہے” ساڑھے چھ سو خاندان اور 3021 افراد نے رضاکارانہ طور پر رواں برس اپنے وطن واپس گئے جبکہ اگست 2015 تک سندھ سے 35,278 افغانیوں کو واپس بھیجا گیا”۔انہوں نے مزید بتایا کہ سزائے موت کے 458 قیدیوں میں سے اٹھارہ کو پھانسی پر لٹکایا جاچکا ہے ” 395 اپیلیں سندھ ہائیکورٹ، ایک وفاقی شرعی عدالت اور 53 سپریم کورٹ میں زیرالتواءہیں، رحم کی پانچ درخواستیں صدر کو بھجوائی جاچکی ہیں جبکہ سندھ ہائیکورٹ نے چار بلیک وارنٹ پر حکم امتناع جاری کیا ہوا ہے”۔ان کا کہنا تھا کہ ستمبر 2013 سے ستمبر 2015 تک 1155 دہشتگرد / جرائم پیشہ افراد ہلاک ہوئے جن میں 164 القاعدہ اور طالبان جبکہ 130 لیاری گینگ وار سے تعلق رکھتے تھے، جبکہ اسی عرصے میں 63 ہزار سے زائد دہشتگردوں/ جرائم پیشہ افراد کو گرفتار کیا گیا جن میں 879 القاعدہ اور طالبان جبکہ 67 لیاری گینگ وار سے تعلق رکھتے تھے۔