- الإعلانات -

انڈین فوجیوں کی فائرنگ سے شہید ہونے والے کشمیریوں کی تعداد 62 ہوگئی

جموں :  مقبوضہ کشمیر میں مظالم کے باوجود حالات بھارتی فوج کے کنٹرول سے باہر ہوگئے، کشمیریوں کے احتجاج اور مظاہروں کے چند گھنٹوں بعد ہی دوبارہ کرفیو نافذ کر دیا گیا۔ وادی میں انڈین فوجیوں کی فائرنگ سے شہید ہونے والے کشمیریوں کی تعداد باسٹھ ہوگئی۔

ظلم کا ہر حربہ آزما لینے اور شہر شہر کرفیو نافذ کرنے کے باوجود بھارتی فوج کشمیریوں کا جذبہ حریت ختم نہ کرسکی، بیس روز تک مسلسل کرفیو کے نفاذ کے بعد جونہی کرفیو میں نرمی کی گئی تو کشمیری نوجوانوں کی بڑی تعداد پاکستانی پرچم اٹھائے سڑکوں پر نکل آئی اور بھارتی فوج کے مظالم کے خلاف یک آواز ہوگئی۔

بھارت فوج نے ایک بار پھر طاقت کا اندھا دھند استعمال کیا جس سے سری نگر میں چار افراد شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے، زخمی ہونے والا ایک اور نوجوان اسپتال میں دم توڑ گیا جس کے بعد کشمیر کے بیشتر علاقوں میں دوبارہ کرفیو نافذ کر دیا گیا ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں گذشتہ روز چالیس مقامات پر بھارتی فوج کے خلاف مظاہرے کیے گئے وادی میں موبائل فون اور انٹرنیٹ سروس بند ہے۔ بھارتی فوج نے بوکھلاہٹ میں حریت رہنماؤں سید علی گیلانی اور میرواعظ عمر فاروق کو گرفتار کر لیا ہے، حریت رہنماؤں نے جمعے کو پوری وادی میں ہڑتال کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ اسی روز احتجاج کے لیے نئے لائحہ عمل کا اعلان کیا جائے گا۔