- الإعلانات -

پاکستان رینجرز اور ہندوستانی بارڈر فورس کا سیز فائر پر اتفاق.

نئی دہلی: پاکستان رینجرز اور ہندوستانی بارڈر سیکیورٹی فورس (بی ایس ایف) نے ورکنگ باؤنڈری پر سیز فائر پر اتفاق کیا ہے۔

نئی دہلی میں پاکستان رینجرز اور ہندوستانی سیکیورٹی فورس کے افسران کے درمیان ہونے والی ملاقات کے میں سیز فائر کی سنگین خلاف ورزیوں کی مشترکہ تحقیقات کے علاوہ اسمگلنگ کی روک تھام کے لئے مربوط بارڈر کنٹرول پر بھی اتفاق کرلیا گیا ہے۔

یہ اتفاق دونوں ملکوں کی سرحدی فورسز کے درمیان دہلی میں جاری مذاکرات کے تیسرے روز سامنے آیا ہے۔

پاکستان رینجرز کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ نئی دہلی میں ہندوستانی سیکیورٹی فورس کے ساتھ مذاکرات میں ورکنگ باؤنڈری پر فائر بندی روکنے پر اتفاق کیا گیا ہے۔

رینجرز ترجمان کے مطابق مذاکرات میں اتفاق ہوا کہ مستقبل میں ورکنگ باؤنڈری کی خلاف ورزی پر مشترکہ تحقیقات کرائی جائیں گی۔

اسمگلنگ کی روک تھام کیلیے رینجرز اور بی ایس ایف میں مربوط بارڈر کنٹرول پر بھی اتفاق ہوا ہے۔

ترجمان کے مطابق پاکستان نے رینجرز اہلکاروں کی شہادت کا معاملہ بھرپور انداز میں اٹھایا اور ڈی جی بی ایس ایف نے آئندہ ایسے واقعات نہ ہونے کا یقین دلایا۔

پاکستان رینجرز اور ہندوستانی بارڈر سیکیورٹی فورس (بی ایس ایف) کے مابین نئی دہلی میں مذاکرات کا آغاز 2 روز قبل ہوا تھا۔

خیال رہے کہ حالیہ دنوں میں وکنگ باؤنڈری اور لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر دونوں جانب سے سیز فائر کی خلاف ورزی کے الزامات لگائے جاتے رہے ہیں۔

پاکستان نے حالیہ ہفتوں میں 2 بار ہندوستان کے ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلب کرکے سیز فائر کی خلاف ورزی پر احتجاج کے لیے طلب کیا.

17 اگست کو ہندوستانی ڈپٹی ہائی کمشنر کو بی ایس ایف کی ایل او سی پر کوٹلی کے مقام پر بلا اشتعال شیلنگ سے ایک خاتون سمیت 3 شہریوں کی ہلاکت اور 15 کے زخمی ہونے پر طلب کیا گیا تھا، بعد ازاں 19اگست جندکروٹ، نکھیال اور کریلا سیکٹرز میں بھی بلااشتعال فائرنگ سے ایک شہری کی ہلاکت جبکہ چار دیگر کے زخمی ہونے پر ہندوستانی ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلب کیا گیا.

دی ہندو کی ایک رپورٹ کے مطابق ہندوستان کی بارڈر سیکیورٹی فورس کے حکام کا دعویٰ ہے کہ مئی 2014 سے مئی 2015 کے دوران پاکستان کی جانب سے 46 بار سیز فائر کی خلاف ورزی کی گئی جبکہ گزشتہ 3 ماہ میں 49 بار خلاف ورزی سامنے آئی ہے.

یاد رہے کہ دونوں ممالک کے بارڈر سیکیورٹی پر مامور فورسز کے سربراہان میں آخری ملاقات دسمبر 2013 میں ہوئی تھی جس کے بعد کوئی ملاقات نہ ہو سکی، البتہ روس کے شہر اوفا میں پاکستان اور ہندوستان کے وزرائے اعظم کے ملاقات میں افسران کی ملاقات طے کی گئی تھی.

واضح رہے کہ 23 اور 24 اگست کو پاکستان اور ہندوستان کے داخلی سیکیورٹی کے مشیروں کی ملاقات بھی طے تھی مگر یہ ملاقات عین وقت پر اُس وقت منسوخ ہو گئی تھی، جب ہندوستان نے شرط عائد کی کہ پاکستانی کے سیکیورٹی مشیر سرتاج عزیز مذاکرات سے قبل کشمیر کے حریت پسند رہنماؤں سے ملاقات نہ کریں جبکہ پاکستان نے زور دیا تھا کہ ہندوستان مذاکرات سے قبل پیشگی شرائط عائد نہ کرے.