- الإعلانات -

روس کا شامی افواج کے خلاف الزام کو تسلیم کرنے سے انکار

روس نےاقوام متحدہ کی سربراہی میں حلب میں باغیوں کے زیر انتظام علاقے میں کلورین گیس کے استعمال سے متعلق رپورٹ کو ماننے سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ زیادہ امکان اسی کا ہے کہ کلورین گیس کا استعمال ہوا ہے لیکن کس نے ایسا کیا یہ ابھی واضح نہیں ہے۔

شامی باغیوں نے الزام عائد کیا تھا کہ صدر بشار الاسد کی حامی افواج نے حلب شہر میں کلورین گیس کا حملہ کیاگیا جس میں مبینہ طور پر کئی افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

اقوام متحدہ نے ستمبر 2013 میں شام پر ایسی قرارداوں کی منظوری دی تھی کہ اگر کیمیکل حملے کی تصدیق ہوگئی تو یہ جنگی جرم کے برابر تصور ہوگا اور شام میں بیرونی فوجی مداخلت ہو سکے گی۔

پچھلے ہفتے سامنے آنے والے ایک رپورٹ کے مطابق بشار الاسد کی حامی افواج نے دو مواقع پر حلب میں کلورین گیس کے حملے کیے ہیں۔

اقوام متحدہ میں روس کی نمائندہ نے کہا کہ ابھی کئی سوالوں کے جواب آنا ضروری ہیں۔

اقوام متحدہ میں روسی مندوب وٹالی چرکن نے منگل کے روز سکیوٹی کونسل کے اجلاس میں کہا کہ شام پر پابندیوں کا مطالبہ قبل از وقت ہے۔ روسی مندوب نے کہا کہ یقیناً ایسی شہادتیں موجود ہیں کہ کلورین کا استعمال ہوا ہے لیکن’گن پر کس کی انگلیوں کے نشان موجود نہیں ہیں‘۔

اقوام متحدہ میں شام کے مندوب بشار جعفری نے کیمیکل ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق رپورٹ کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ رپورٹ ان لوگوں کے بیانات پر مبنی ہے جنھیں دہشتگرد گروہوں نے پیش کیا اور کسی قسم کوئی مادی شہادت پیش نہیں کی گئی ہے۔

فرانس اور برطانیہ نے جو بشار الاسد کے مخالف باغیوں کی حمایت کرتے ہیں، مطالبہ کیا تھا کہ شام پر عالمی پابندیاں عائد کی جائیں۔

شام کی حکومت نے کلورین گیس کے استعمال کی سختی سے تردید کی ہے

شام نے 2013 میں اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں عالمی نگرانی میں کیمیکل ہتھیاروں کو تلف کر دیا تھا۔ ایک اور تحقیق میں سامنے آیا تھا کہ شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ نے بھی مسٹرڈ گیس کا استعمال کیا تھا۔

اگست 2015 میں کیمیکل ہتھیاروں کے استعمال کے الزامات کے بعد اقوام متحدہ کی سکیورٹی کونسل نے جوائنٹ انویسٹیگیشن میکیزم (جے آئی ایم) قائم کیا تھا۔

شام کی حکومت نے کلورین گیس کے استعمال کی سختی سے تردید کی ہے۔

کلورین گیس جائز صنعتی مقاصد کےلیے بھی استعمال ہوتی ہیں لیکن اس کا بطور ہتھیار استعمال ممکن ہے۔ اگر کلورین گیس کی بڑی مقدار کسی فرد کے پھیپڑوں میں داخل ہو جائے تو اس سے موت واقع ہو سکتی ہے۔

منگل کے روز اقوام کی سکیورٹی کونسل کے اجلاس میں امریکہ کی مستقل مندوب سمانتھا پاور نے جوائنٹ انویسٹیگیشن میکیزم کی رپورٹ کو ایک سنگ میل قرار دیتےہوئےکہا کہ اس رپورٹ پر جلد سے جلد عمل درآمد ہونے کی ضرورت ہے۔

امریکی مندوب نے کہا ہے کہ یہ ان شہادتوں کی پہلی سرکاری تصدیق ہے جس ہم ایک عرصے سے پیش کر رہے ہیں۔