- الإعلانات -

شمالی کوریا نے اپنے ایک اعلی سطحی وزیر کو سزائے موت دے دی ہے۔

جنوبی کوریا کے حکومتی اہلکاروں کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا نے اپنے ایک اعلی سطحی وزیر کو سزائے موت دے دی ہے۔

سیول میں یونیفیکیشن کی وزارت کا کہنا ہے کہ کم یانگ جِن پیانگ یانگ میں تعلیم کے لیے نائب وزیر تھے۔

جنوبی کوریا کے حکام نے یہ واضح نہیں کیا کہ انھیں یہ اطلاعات کیسے ملیں۔ اس سے پہلے اس طرح کے واقعات سے متعلق سیول کی اطلاعات متفرق رہی ہیں۔

مئی میں بتایا گیا کہ شمالی کوریا کے فوجی سربراہ کو سزائے موت دی گئی تاہم بعد میں وہ سرکاری تقریبات میں شرکت کرتے دیکھے گئے۔

اس کے علاوہ ری یانگ گِل کے موت کی خبریں فروری میں گردش کرتی رہیں تاہم جب وہ شمالی کوریا کی جماعت کے کانگرس میں شریک ہوئے تو یہ امر اجاگر ہوا کہ شمالی کوریا کے بارے میں کوئی بھی مصدقہ خبر حاصل کرنا کتنا مشکل کام ہے۔

جنوبی کوریا کی یونیفیکیشن کی وزارت شمالی کوریا کے ساتھ تعلقات کا انتظام سنبھالنے کے ساتھ جاسوس ایجنسی بھی ہے۔ یہ جنوبی کوریا کے لیے پیانگ یانگ سے متعلق معلومات کا مرکزی ذریعہ ہے۔

اطلاعات ہیں کہ کِم یانگ چول جو انٹیلیجنس اور کوریا کے دونوں حصوں کے درمیان تعلقات کے ذمہ دار تھے انھیں جولائی میں ایک ماہ کے لیے دوبارہ تعلیم حاصل کرنے کے لیے بھجوا دیا گیا

وزارتِ یونیفیکیشن کا کہنا ہے کہ ایک اور وزیر کِم یانگ چول جو انٹیلی جنس اور کوریا کے دونوں حصوں کے درمیان تعلقات کے ذمہ دار تھے ایک دوسرے اہلکار چوئی ہوی کے ہمراہ جولائی میں ایک ماہ کے لیے دوبارہ تعلیم حاصل کرنے کے لیے بھجوا دیا گیا۔

ان دونوں کا تذکرہ اکثر پیانگ یانگ کے سرکاری بیانات میں ہوتا ہے۔

جہاں کِم یانگ جِن کے بارے میں لوگ کم جانتے ہیں وہیں کِم یانگ چول اکثر تصاویر میں شمالی کوریا کے رہنما کم جانگ اُن کے ہمراہ دکھائی دیتے ہیں اور ان کے قریب سمجھے جاتے ہیں۔ مئی میں ہونے والے کانگرس میں انھیں نیشنل انٹیلی جنس کا سربراہ نامزد کیا گیا تھا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا میں حکام کو اکثر دوبارہ تعلیم کے لیے بھجوایا جاتا ہے اور یہ عمل بعض دفعہ ’کواپریٹ ٹریننگ‘ کے طور پر لیا جاتا ہے۔ تاہم اس دوبارہ تعلیم کے بعد بعض اہلکاروں کو ترقی دی جاتی ہے اور بعض کے حصے میں تنزلی۔

جنوبی کوریا کی یونیفیکیشن کی وزارت کے اس بیان سے ایک دن پہلے ہی ایک اخبار نے بھی ایک غیر مصدقہ خبر دی تھی جس کے مطابق شمالی کوریا میں تعلیم اور زراعت کے شعبوں میں دو مختلف عہدوں پر تعینات اہلکاروں کو سزائے موت دے دی گئی ہے۔

ایک روز قبل ہی برطانیہ میں مقیم شمالی کوریا کے ایک اہلکار بھی منحرف ہو گئے تھے۔

یہ صاف واضح ہے کہ شمالی کوریا کی اعلی سیاسی اسٹیبلشمنٹ کے اہلکار غیر محفوظ تصور کرتے ہیں کیونکہ کِم جونگ اُن نے چار سال میں چار وزرائے دفاع تبدیل کیے ہیں۔