- الإعلانات -

جی 20 اجلاس؛ مودی کا چینی صدر سے راہداری منصوبے پر تحفظات کا اظہار

نئی دہلی / ہانگ ژو: بھارتی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ وزیراعظم نریندر مودی نے جی 20 سربراہی اجلاس کے موقع پر چینی صدر شی چن پنگ سے ملاقات میں سی پیک منصوبے پر تحفظات کا اظہار کیا۔

بھارتی وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سوارپ نے صحافیوں سے گفتگومیں بتایا کہ چینی صدر کے ساتھ 30 منٹ تک جاری رہنے والی ملاقات میں نریندر مودی نے منصوبے پرتحفظات کا اظہار کیا اور اس بات پر زور دیا کہ دونوں ممالک کو ایک دوسرے کی امنگوں، خدشات اور اسٹرٹیجک مفادات کا احترام کرنا چاہیے۔ مودی نے کہا کہ نئی دہلی اور بیجنگ کو ایک دوسرے کے اسٹرٹیجک مفادات کیلیے حساسیت کا مظاہرہ کرنا پڑے گا۔ چین اور بھارت کے درمیان شراکت داری نہ صرف خطے بلکہ دنیا کیلیے بھی اہمیت کی حامل ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق مودی نے پڑوس سے نکلنے والی دہشت گردی کی بنیادی وجوہ سے نمٹنے پر بھی زور دیا۔ چینی صدر نے کہا کہ چین بھارت کے ساتھ موجود ہ تعلقات کو برقراررکھنے اور تعاون میں مزید اضافے کے لیے کام کرنا چاہتا ہے۔ دوسری جانب چینی وزارت خارجہ کے ترجمان نے اپنے بیان میں کہاکہ چینی صدر نے بھارتی وزیراعظم کوبتایاکہ ہمیں ایک دوسرے کی تشویش اور خدشات کا احترام کرتے ہوئے باہمی اختلاف کوتعمیری انداز میں دور کرنا چاہیے۔

واضح رہے کہ بھارت اس سے پہلے بھی راہداری منصوبے پرغیرضروری اعتراضات اٹھاتا رہا ہے تاہم چین نے ہمیشہ ان کومسترد کرتے ہوئے واضح کیا کہ راہداری منصوبہ ہرصورت مکمل ہوگا۔ دریں اثنا برکس ارکان سے ملاقات میں بھارتی وزیراعظم نے کہا کہ دہشت گردی اور اس کے اسپانسرزکو الگ تھلگ کرنے کیلیے مشترکہ کوششوں کو تیزکرنا ہو گا۔ دہشت گردی ہمارے معاشروں اور ملکوں میں عدم استحکام کا بنیادی سبب اور سب سے بڑا خطرہ ہے۔

دنیا کی20 بڑی معاشی طاقتوں پرمشتمل جی ٹوئنٹی گروپ کا اجلاس چین میں شروع ہوگیا، اجلاس سے افتتاحی خطاب میں چین کے صدر شی چن پنگ نے کہا ہے کہ عالمی معیشت میں بہتری آ رہی ہے تاہم اب بھی بہت سے مسائل کا سامنا ہے، انھوں نے عالمی رہنماؤں سے کہا کہ وہ کھوکھلے اور بے مقصد مذاکرات سے اجتناب کریں۔ اقتصادی بہتری کیلیے ضروری ہے کہ بامقصد بات چیت کی جائے۔

عالمی معیشت کو درپیش مسائل کے تناظر میں بین الاقوامی برادری کوجی20 اجلاس سے کافی امیدیں وابستہ ہیں، اجلاس میںعالمی معاشی صورتحال، دہشت گردی، ماحولیاتی آلودگی جیسے معاملات پر غور ہوگا۔ آئی این پی کے مطابق چینی صدر نے 4نکاتی ایجنڈا پیش کیا، انھوں نے کہا کہ اقتصادی راہداری منصوبے اور میری ٹائم سلک روڈکی ایک ساتھ تعمیر اہم پیش رفت ہے ،چینی قیادت میں قائم ہونے والا ایشین انفرااسٹرکچر انویسٹمنٹ بینک بھی خطے کی بنیادی ڈھانچے کی تعمیر میں فعال کردار ادا کر رہاہے۔

چینی اصلاحات نے معاشی و سماجی ترقی کے نئے دروازے کھول دیے ہیں، دنیا چین کی طرف اورچین دنیا کی طرف دیکھ رہاہے، چین نے اپنی اصلاحات کے مقاصد طے کر لیے ہیں اور وہ ان سے پیچھے نہیں ہٹے گا۔ جی ٹوئنٹی گروپ کا اجلاس پہلی مرتبہ چین میں ہو رہا ہے، اس موقع پر شہر بھر میں سیکیورٹی کے بھی سخت اقدام کیے گئے ہیں، جبکہ فضا کو آلودگی سے پاک رکھنے کے لیے فیکٹریاں بند کردی گئی ہیں۔