- الإعلانات -

کالعدم تنظیموں کے 9دہشت گرد لاہور میں داخل، سکیورٹی سخت کرنے کا حکم

لاہور : محکمہ داخلہ پنجاب نے صوبائی دارالحکومت میں دو کالعدم مذہبی تنظیموں کے 9دہشت گردوں کے داخلے کی ایک حساس ادارے کی خفیہ رپورٹ پر لاہور پولیس کو اہم مقامات کی سکیورٹی سخت کرنے کا حکم دیا ہے۔ محکمہ داخلہ کی طرف سے اس ضمن میں دہشت گردوں کی عمریں 18سے 22سال تک بتائی گئی ہیں محکمہ داخلہ نے اس ضمن میں آئی جی پولیس کو کہا گیا ہے کہ وہ لاہور پولیس کو اس حوالہ سے اپنی سکیورٹی کو فول پروف بنائیں کیونکہ مبینہ دہشت گرد لاہور میں اہم مقامات جن میں کربلا گامے شاہ، امریکن قونصلیٹ، گورنر ہاﺅس، بادشاہی مسجد، داتا دربار، مسجد شہدا، بی بی پاک دامن دربار، پنجاب اسمبلی اور دیگر حساس مقامات کو نشانہ بناسکتے ہیں دہشت گردوں کے داخلے کی اطلاعات کے بعد صوبائی دارالحکومت میں اہم مقامات پر سکیورٹی اہلکاروں کی تعداد بڑھا دی گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق قانون نافذ کرنیوالے اداروں نے اطلاع دی ہے کہ دور دراز سے آنیوالے بیوپاریوں کے روپ میں چند مشتبہ افراد بھی شہر میں داخل ہوئے ہیں، جس کے بعد ڈی آئی جی آپریشن لاہور ڈاکٹر حیدر اشرف نے ہر تھانہ کے ایس ایچ او کو ہدایات دی ہے کہ وہ بیوپاریوں پر کڑی نظریں رکھیں ان کے شناختی کارڈز یا کوئی شناختی دستاویزات چیک کریں، ذرائع کا کہنا ہے کہ شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر بھی پردیسیوں کی سخت چیکنگ شروع کردی گئی ہے جبکہ بیوپاریوں کی جانچ پڑتال کے بعد ان کے کوائف افسران کو بجھوائے جارہے ہیں۔