- الإعلانات -

چین کے نائب وزیر خارجہ لی باؤڈونگ نے کہا ہے کہ نیوکلیئر سپلائرز گروپ کی مکمل رکنیت کے امکانات پر بات چیت کرنے کا خواہاں ہے۔

چین کے نائب وزیر خارجہ لی باؤڈونگ نے کہا ہے کہ ان کا ملک انڈیا کے نیوکلیئر سپلائرز گروپ (این ایس جی) کی مکمل رکنیت کے امکانات پر بات چیت کرنے کا خواہاں ہے۔

انھوں نے بات گوا میں برکس کے اجلاس سے قبل کہی ہے جس میں چین کے صدر شی جن پنگ بھی شرکت کر رہے ہیں۔

انڈین خبررساں ایجنسی  کے مطابق انھوں نے کہا کہ جیش محمد کے سربراہ مولانا مسعود اظہر پر اقوام متحدہ کی جانب سے پابندی لگائے جانے کے انڈیا کے مطالبے کی مخالفت کی ہے۔

ان کا موقف ہے کہ ‘بیجنگ انسداد دہشت گردی کے نام پر سیاسی فائدہ حاصل کرنے کی کوششوں کے خلاف ہے۔’

انڈیا کے مغربی ساحلی شہر گوا میں ہونے والے پانچ ملکی سربراہی کانفرنس برکس میں برازیل، روس، انڈیا، چین اور جنوبی افریقہ شامل ہیں۔

چینی نائب وزیر خارجہ نے ایک بار پھر سے 48 ممالک پر مبنی تنظیم این ایس جی کی رکنیت پر ‘اتفاق رائے’ پیدا کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

خبررساں ادارے روئٹرز کے مطابق انڈیا نے کہا ہے کہ اس نے چین کے ساتھ این ایس جی کی اپنی رکنیت کے دعوے پر ‘پرمغز گفتگو’ کی ہے۔

خیال رہے کہ جون میں این ایس جی کے 48 ممالک کے اجلاس میں چین نے انڈیا کی رکنیت کے دعوے کی یہ کہتے ہوئے مخالفت کی تھی کہ انڈیا نے جوہری اسلحے کے عدم پھیلاؤ کے معاہدے پر دستخط نہیں کیے۔