- الإعلانات -

پاکستانی سائنسدان نے تحقیقی منصوبے پر”گرین ٹیلنٹس “ ایوارڈ جیت لیا

برلن:جرمنی میں ہونے والی پائیدار ترقی پر ریسرچ کے بین الاقوامی مقابلہ میں پاکستانی سائنس دان واصف فاروق نے ایورڈ اپنے نام کرلیا

تفصیلات کے مطابق پنجاب کے ضلع سرگودھا سے تعلق رکھنے والے 35 سالہ واصف پاکستان کی نیشنل یونیورسٹی فار سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (نسٹ) میں اسسٹنٹ پروفیسر ہیں۔ ان کا یہ پراجیکٹ جرمنی میں بین الاقوامی سطح پر ہونے والے ‘گرین ٹیلنٹس مقابلے 2016 ‘میں شامل تھا۔

ڈاکٹر واصف فاروق نے بائیو فیول کی پیداوار کے لیے فوسل فیول پر انحصار کرنے والے کارخانوں اور بجلی گھروں میں سبز کائی سےتیار کردہ ٹیکنالوجی کےموثر استعمال کا منصوبہ پیش کرنے پر جرمن وزارت برائے تعلیم اور تحقیق کا ریسرچ ایوارڈ حاصل کیا ہے۔آٹھویں گرین ٹیلنٹس مقابلے کے لیے دنیا کے 104 ممالک سے 750 امیدواروں نے اپنی تحقیق پیش کی تھی۔

جس میں سے 16 ممالک سے 25 شاندار ذہنوں کے مالک محققین کو گرین ٹیلنٹس ایوارڈ کا فاتح قرار دیا گیا ہے۔جمعرات 27 اکتوبر کو جرمنی کے دارالحکومت برلن میں ہونے والی گرین ٹیلنٹس ایوارڈ کی ایک شاندار تقریب میں وزیر تعلیم اور تحقیق پروفیسر جوہانا وانکا نے بہترین تحقیقی منصوبہ پیش کرنے والے کامیاب سائنس دانوں کو ایوارڈ سے نوازا۔

جیوری نے پاکستان میں پائیدار ترقی کے مقاصد کے حصول میں مدد کرنے پر واصف فاروق کی کوششوں کو سراہا اور کہا کہ ان کی دریافت نمایاں طور پر پاکستان میں قومی سطح پر گرین ہاوس گیسوں کے اخراج کو کم کر سکتی ہے اور صنعتی شعبے میں اس عمل سے اقتصادی ترقی کو فروغ ملے گا-