- الإعلانات -

ماں اور بیٹی ایک ہوائی اڈے میں ایک سال سے زائد عرصے سے مقیم.

نیکوسیا : آپ کے خیال میں کوئی غیرملکی کسی دوسرے ملک کے ائیرپورٹ پر کتنی دیر تک رہ سکتا ہے ؟ ایک گھنٹہ، دس گھنٹے یا زیادہ سے زیادہ ایک دن ؟

مگر کیا آپ کو معلوم ہے کہ جرمنی سے تعلق رکھنے والی ایک ماں اور بیٹی قبرص کے ایک ہوائی اڈے میں ایک سال سے زائد عرصے سے مقیم ہیں۔

جی ہاں اسرائیل سے ڈیپورٹ ہونے والی ایک جرمن خاتون اپنی بیٹی کے ہمراہ قبرص کے لارناکا ائیرپورٹ پر ایک سال سے زائد عرصے سے مقیم ہیں۔

ایک ہولی وڈ فلم دی ٹرمینل کی یاد دلانے والی یہ دونوں خواتین ائیرپورٹ کے شاپنگ، ریسٹورنٹ، وائی فائی اور باتھ روم کی سہولیات کو اگست 2014 میں یہاں آنے کے بعد سے استعمال کرکے گزارا کررہی ہیں۔

یہ دونوں خواتین جن کے نام سامنے نہیں آئے، ائیرپورٹ کی کار پارکنگ میں سلیپنگ بیگز میں راتیں گزارتی ہیں اور وہ انتہائی سرد ترین اور شدید گرمی جیسی مشکلات کا سامنا کرنے کے باوجود حالات میں تبدیلی لانے کے لیے تیار نہیں۔

یہ دونوں خواتین جرمنی جانے کے لیے تیار نہیں حالانکہ ان کے ملک کے سفارتخانے اور مقامی حکام نے معاونت کی بھی پیشکشیں کیں۔

ائیرپورٹ انتظامیہ کو ان ماں اور بیٹی کے پس منظر کے بارے میں کچھ زیادہ نہیں معلوم مگر ایک سال سے زائد عرصے تک ان کی میزبانی کے بعد وہ اب چاہتے ہیں کہ انہیں یہاں سے بھیج دیا جائے۔

ان کا کہنا ہے کہ ہم نے انسانی ہمدردی کے تحت ان کی مدد کی مگر یہ ہمارا کام نہیں، ہمارا کام لوگوں کو سفر میں مدد دینا ہے اپنے ائیرپورٹ کو ہوٹل بنانا نہیں۔

جرمن خواتین کے بارے میں یہ مانا جاتا ہے کہ ان کے اسرائیل میں رشتے دار ہیں اور یہ وہاں جانے کی خواہشمند ہیں مگر اپنے اسٹیٹس کے کلیئر ہونے کی منتظر ہیں۔

خیال رہے کہ اس سے پہلے ہولی وڈ میں دی ٹرمینل کے نام سے فلم بنی تھی جس میں ٹام ہینکس نے ایسے کردار کو ادا کیا تھا جو جے کے ایف ائیرپورٹ پر اس وقت رہنا شروع کردیتا ہے جب اسے امریکا میں داخلے کی اجازت نہیں دی جاتی۔