- الإعلانات -

کوئی مقدس گائے نہیں ہے احتساب بلا امتیاز ہونا چاہیے۔ رضا ربانی

کراچی: پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) سے تعلق رکھنے والے سینیٹ کے چیئرمین رضا ربانی اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن رہنما خورشید شاہ نے بلا امتیاز احتساب کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں کوئی مقدس گائے نہیں ہے۔دونوں رہنماؤں نے ملٹری اسٹیبلشمنٹ کو ملک کے سیاستدانوں کے احتساب پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔رضا ربانی نے کراچی میں مرحوم فتحیاب علی خان کی یاد میں منعقد ایک تقریب سے خطاب کے دوران کہا کہ ’آج کل ملک میں جس فرد کے بھی خیالات متصادم ہیں اسے حکام کرپٹ تصور کررہے ہیں اور یہ ایک مزاق بن گیا ہے۔‘انھوں نے کہا کہ وہ مانتے ہیں کہ بیشتر سیاسی کارکنان کرپٹ ہیں تاہم کیا فوج اور سول سیکٹر کرپشن سے پاک ہے؟خصوصی عدالتوں پر گفتگو کرتے ہوئے سینیٹ چیئرمین کا کہنا تھا کہ کیا خصوصی عدالتیں صرف سیاستدانوں کے لئے ہی قائم کی گئی ہیں؟انھوں نے کہا کہ یہاں کسی قسم کی تفریق موجود نہیں ہے اور قانون کی نظر میں سب برابر ہیں۔رضا ربانی نے کہا کہ یہاں کوئی مقدس گائے نہیں ہے اور احتساب بلا امتیاز ہونا چاہیے۔ ’ہمیں قومی احتساب بیورو کو بھی چیک کرنا ہوگا، لیکن اس ادارے کا احتساب کون کرے گا جو کہ دیگر سب کا احتساب کررہا ہے۔‘ادھر اسلام آباد سے جاری ہونے والے بیان میں خورشید شاہ کہا ہے کہ ان کی جماعت کبھی بھی ماورائے قانون اقدام کو مدد فراہم نہیں کرے گی اور کسی بھی ادارے کو یہ حق نہیں دے گی کہ وہ سیاستدانوں کا مزاق بنائے۔انھوں نے کہا کہ احتساب بلا امتیاز سب کا ہونا چاہیے اور یہاں کوئی مقدس گائے نہیں ہے۔انھوں نے مزید کہا کہ پی پی نے اپنے دوران حکومت میں کسی بھی ادارے کو کسی سیاسی حریف کے خلاف استعمال نہیں کیا ہے۔آپوزیشن رہنما نے مطالبہ کیا کہ جاری متنازعہ احتساب عمل کو بند کرنے کے لئے پارلیمانی کیمٹی تشکیل دی جائے۔