- الإعلانات -

پیپلزپارٹی ہی بے نظیر کی قاتل ہے. مشاہد اللہ

اسلام آباد: مسلم لیگ نواز کے رہنما سینیٹر مشاہد اللہ نے سینیٹ میں الزام عائد کیا ہے کہ پیپلزپارٹی ہی بے نظیر کی قاتل ہے، اسی وجہ سے تحقیقات نہیں کی گئیں۔

ڈپٹی چئیرمین عبدالغفور حیدری کی صدارت میں سینیٹ اجلاس کے دوران اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آج بتایا جائے کہ بھٹو کے قاتلوں کے ساتھ کون رہتا رہا ہے، بتایا جائے کہ ایل پی جی پر سابق صدر پرویز مشرف سے کس نے رعایت لی۔

سینیٹر مشاہد اللہ کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی اپنے دور میں کرپشن کو روکتی تو آج اس کے یہ حالات نہ ہوتے۔

اگست 2015 دہشتگردی کے واقعات میں 588 افراد ‘شہید’

اس سے قبل سینیٹ اجلاس کے دوران وزارت داخلہ کی جانب سے سینیٹ کو بتایا گیا ہے کہ رواں سال اگست دوہزار پندرہ تک پاکستان بھر میں دہشتگردی کے پانچ سو اکیس واقعات ہوئے جن میں پانچ سو اٹھاسی افراد ‘شہید’ ہوئے، ان واقعات میں ایک ہزار سات افراد زخمی ہوئے۔

اجلاس میں وزارت داخلہ کے تحریری جواب میں ایوان کو بتایا کہ سال دوہزار سات سے ستبمر دوہزار پندرہ تک پاکستان میں غیر ملکیوں کی تعداد چار لاکھ اکیانوے ہزار نو سو پانچ ہے۔

تحریری جواب میں بتایا گیا کہ پاکستان میں سزائے موت کے اس وقت قیدیوں کی تعداد چھ ہزار سولہ ہے، ایسے تمام قیدی جن کی رحم کی اپیلیں مسترد ہوچکی ہیں ان کو پھانسی دے دی جاچکی ہے۔

تحریری جواب میں مزید بتایا گیا کہ رواں سال اگست دوہزار پندرہ تک پاکستان بھر میں دہشتگردی کے پانچ سو اکیس واقعات ہوئے جن میں پانچ سو اٹھاسی افراد ‘شہید’ ہوئے، ان واقعات میں ایک ہزار سات افراد زخمی ہوئے۔

ایوان کو بتایا گیا کہ اس وقت دس فوجی عدالتیں کام کررہی ہے جبکہ گیارہویں فوجی عدالت کے قیام پر کام جاری ہے۔

افواج پاکستان سمیت سب کا بلاتفریق احتساب ہونا چاہیے: اعتزاز احسن

سینیٹ سے اظہار خیال میں قائد حزب اختلاف سینیٹر اعتزاز احسن نے کہا کہ افواج پاکستان اور عدلیہ سمیت سب کا بلاتریق احتساب ہونا چاہیئے، کرپشن ہر طرف ہوئی ہے اور ہر جماعت میں ایسے عناصر موجود ہیں جنہوں نے کرپشن کی۔

اعتزاز احسن نے اعتراف کیا کہ پیپلزپارٹی میں میں بھی کرپٹ عناصر موجود رہے ہیں تاہم پبلک فگرز پر ثابت کیے بغیر الزامات لگائے جاتے ہیں۔

اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے 1994، 95 اور 1996 میں ٹوٹل انکم ٹیکس 477 روپے جمع کرایا جس کا ان کے پاس دستاویزی ثبوت موجود ہے۔

اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ حکومتی وزراء تردید کریں پا پھر وضاحت کیلئے ٹائم لیں، بتایا جائے کہ 477 روپے انکم ٹیکس دینے والا اربوں کا مالک کیسے بن گیا۔

انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کی حکومت پر بدعنوانی کا الزام لگے تو وزیراعظم دھر لیا جاتا ہے، لیکن نندی پور منصوبے میں فقط بیوروکریسی کے لوگوں پر الزام آتا ہے۔

اعتزاز احسن کاکہنا تھا کہ ایل این جی، میٹرو بس منصوبہ اور سولر پاور منصوبے میں شفافیت نہیں۔

نندی پور پر حکومت ہر قسم کی تحیققات کیلئے تیار ہے: خواجہ آصف

وزیر پانی وبجلی خواجہ آصف نے اپنے اظہار خیال میں کہا نندی پور پاور پراجیکٹ پر حکومت ہر قسم کی تحیققات کیلئے تیار ہے، قومی اسمبلی کی پیبلک اکاونٹس کمیٹی تحقیقات کا حکم دے چکی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ حکومت کی جانب سے نندی پور پر حقائق پیش کرنے پر تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جنوری 2013 میں مسلم لیگ برسر اقتدار نہیں آئی تھی، مسلم لیگ نے جون 2013 میں نندی پور منصوبے کی منظوری دی، منصوبہ بشمول تخمیہ و اخراجات پیپلزپارٹی نے بنایا۔

وزیردفاع خواجہ آصف نے کہا کہ ایل او سی پر ہونے والی خلاف ورزی پر پاکستان نے منہ توڑ جواب دیا، ہندوستانی خلاف ورزیوں پر پاکستان نے ہمیشہ موثر جواب دیا۔

‘ہندوستان مسئلہ کشمیر سے توجہ ہٹانے کیلئے ایل او سی کی خلاف ورزی کر رہا ہے’

اس موقع پر مشیر امور خارجہ سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ توقع ہے کہ عالمی برادری مسئلہ کشمیر پر توجہ دے گی۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان مسئلہ کشمیر سے توجہ ہٹانے کیلئے ایل او سی کی خلاف ورزی کر رہا ہے، یہ خلاف ورزیاں کشیدگی میں اضافہ کررہی ہیں، ایل او سی پر ہونے والی خلاف ورزیاں معمولی نہیں۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان نے اقوام متحدہ مبصروں کے وفد سے تعاون سے انکار کیا۔ انکا کہنا تھا کہ نو سے بارہ ستمبر تک نئی دہلی میں پاک ہندوستان سرحدی حکام نے ملاقات کی، پاکستان نے عالمی برادری کو ورکنگ باونڈری اور ایل او سی کی خلاف ورزیوں سے باقاعدگی سے آگاہ کیا ۔ہندوستان کی جانب سے ایل او سی کی خلاف ورزی پر سینیٹ میں تحریک التواء بھی پیش کی گئی جسے سینیٹر ستارہ ایاز خان نے پیش کیا۔