- الإعلانات -

ہندوستان کی پاکستان میں مداخلت کے شواہد جان کیری کو فراہم.

واشنگٹن: وزیراعظم نواز شریف نے امریکی وزیر خارجہ جان کیری سے ملاقات کے دوران ہندوستان کی پاکستان میں مداخلت کے شواہد فراہم کردیے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ملاقات کے دوران نواز شریف نے ہندوستان کی بلوچستان، فاٹا اور کراچی میں عدم استحکام کی کارروائیوں کے حوالے سے آگاہ کیا۔

وزیراعظم نے جان کیری سے ملاقات کے دوران امن کے لیے اقوام متحدہ میں تقریر کے نکات پر آگاہ کیا۔

اس موقع پر امریکی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ آپریشن ضرب عضب میں کامیابی وزیراعظم کی امن قائم کرنے کی پالیسی کا ثبوت ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں توانائی کی ضروریات کے لیے ہر قسم کا تعاون فراہم کریں گے جبکہ امریکا پاکستان کے ساتھ اقتصادی تعلقات مزید مضبوط کرے گا۔

امریکی وزیر خارجہ نے خطے میں امن و سلامتی کے لیے وزیراعظم کی کوششوں کو سراہا۔

ملاقات کے دوران امریکی وفدمیں رچرڈاولسن، پیٹر لیوے، پاکستان اور افغانستان کیلیے نمایندہ خصوصی لورل ملر بھی شریک تھے.

خیال رہے کہ وزیراعظم گزشتہ روز چار روزہ سرکاری دورے پر امریکا پہنچے تھے جہاں ان کی صدر باراک اوباما سمیت اہم ترین امریکی حکام سے ملاقات ہوگی۔

مشیر خارجہ سرتاج عزیز، امریکا میں پاکستان کے سفیر جلیل عباس جیلانی، اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی اور دیگر اعلیٰ سطحی حکام بھی وزیراعظم کے ہمراہ موجود ہیں۔

وزیر اعظم امریکی صدر کی دعوت پر امریکا پہنچے ہیں جہاں وہ ان سے 22 اکتوبر کو ملاقات کریں گے۔

ملاقات کے دوران افغانستان میں قیام امن اور ہندوستان کے حوالے سے پاکستان کے تحفظات سمیت مختلف امور پر بات چیت کی جائے گی۔

اس سے قبل لندن آمد کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ امریکی حکام سے بات چیت میں پاکستانی مفاد کو ترجیح دی جائے گی۔

امریکا روانگی سے قبل اپنے بیان میں وزیر اعظم نواز شریف نے کہا تھا کہ پاکستان اور امریکا کے درمیان تعلقات تسلی بخش طور پر آگے بڑھ رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بطور خودمختار ریاست پاکستان کی جمہوری اقدار ہیں، پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں صف اول کا کردار ادا کیا جبکہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں آپریشن ضرب عضب کی کامیابی ہمارے عزم کی دلیل ہے۔