- الإعلانات -

شریک حیات کے موبائل فون کی جاسوسی سے متعلق دلچسپ تحقیق

لندن:  کسی کے فون کی چوری چھپے تلاشی لینا یا پیغامات پڑھنا غیر اخلاقی سمجھاجاتا ہے لیکن ایک تحقیق میں انکشاف ہواہے کہ 20 فیصد مرد اور 25 فیصد خواتین اپنے شریک حیات کے فون پر موجود تصویروں، ویڈیوز اور میسج کو چھپ کر دیکھتے ہیں۔ ہالینڈ میں کی گئی اس تحقیق میں 132 لوگوں سے سوالات کئے گئے جس دوران اکثریت کا کہنا تھا کہ وہ اپنے شریک حیات کا جھوٹ پکڑنے کیلئے ایسا کرتے ہیں اور دلچسپ بات یہ ہے کہ اکثریت کا شک درست ثابت ہوا۔ خواتین کی 71 فیصد تعداد نے بتایا کہ انہیں خاوند پر شک کی صورت میں موبائل فون سے اس کے شواہد مل گئے جبکہ 50 فیصد سے زائد مردوں نے کہا کہ ان کے ساتھ ایسا ہوچکا ہے۔ چالیس فیصد خواتین کا کہنا تھا کہ ان کے خواند کے فون پر کوئی پاسورڈ نہیں لگایا گیا تھا جبکہ 33 فیصد مردوں کا کہنا تھا کہ بیوی کے فون پر پاس ورڈ نہیں لگا ہوا تھا۔ جن لوگوں کو شریک حیات کا پاس ورڈ معلوم تھا انہوں نے بتایا کہ یہ انہیں پہلے کسی وقت بات چیت میں معلوم ہوگیا تھا۔ پچاس فیصد سے زائد لوگوں نے بتایا کہ فون کی تلاشی لینے سے ان کے شکوک و شبہات کی تصدیق ہوگئی۔ یہ تحقیق انٹرنیٹ سکیورٹی کمپنی ایواسٹ نے کی۔