- الإعلانات -

داعش نے ایک اور ملک کو دھمکی دیدی

شام کی انتہا پسند تنظیم داعش نے روم کے چرچ کے پوپ کو نشانہ بنانے کی دھمکی دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق داعش نے ایک ویڈیو کے ذریعے روم میں پیرس حملوں کی طرح حملے کی دھمکی دی ہے جبکہ روم کے چرچ کے پوپ کا کہنا ہے کہ وہ داعش کی دھمکیوں سے نہیں ڈرتے۔ میڈیا کی رپورٹ کے مطابق پوپ فرانسک نے اپنی حفاظت کے لیے بلٹ پروف جیکٹ پہننے سے انکار کر دیا۔ان کا کہنا تھا کہ وہ اپنے مطمئن سٹائل میں ہی کرسمس کی تقریب میں شرکت کریں گے۔ داعش نے روم کو دھمکی دینے کے لیے جو ویڈیو جاری کی ہے اس میں واضح کیا ہے کہ ان کا نشانہ چرچ کا ہیڈ پوپ فرانسک ہے ،داعش کی جاری کردہ ایک تصویر پر سینٹ پیٹر کی تصویر کے ساتھ داعش کا جھنڈا بنا ہوا تھا۔ پوپ کے ایک ترجمان کا کہنا تھا کہ پوپ اس خطرے سے آگاہ ہیں مگر وہ داعش سے نہیں ڈرتے بلکہ اس سال کرسمس کی تقریب نے انہوں نے اپنی حفاظت کے لیے سیکیورٹی لینے سے بھی انکار کر دیا۔ روم کی پولیس کا کہنا ہے کہ انہوں نے پوپ کو چرچ میں سیکیورٹی بڑھانے کی نصیحت کی ہے جبکہ چرچ کے فادر کا کہنا تھا کہ چرچ داعش کے خطرے سے آگاہ ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ہو سکتا ہے کہ یہ دھمکی حقیقی ہو یا ہو سکتا ہے کہ داعش یہ ثابت کرنا چاہتی ہے کہ وہ ایسی ویڈیوز کے ذریعے دہشت پھیلانے میںکتنی طاقتور ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق چرچ میں چاروں طرف سیکیورٹی کے انتظامات کر دیے گئے ہیں البتہ پوپ نے سیکیورٹی جیکٹ پہننے سے انکار کر دیا ہے۔ پولیس کا کہنا تھا کہ داعش کی دھمکی کے بعد جیکٹ پہنے بنا لوگوں سے خطاب کرنا بیوقوفانہ بات ہے۔ پوپ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ پوپ منع کرنے کے باوجود افریقہ میں سینٹرل افریقن ریپبلک میں شرکت کے لیے گ