- الإعلانات -

کوئی اور ملک دہشت گردی سے اتنا متاثر نہیں جتنا پاکستان ہوا”امریکا”

واشنگٹن : امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ مستحکم اور محفوظ افغانستان کی منزل کے حصول میں پاکستان ایک اہم پارٹنر ہے۔

واشنگٹن میں پریس بریفنگ کے دوران امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان مارک ٹونر نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے دہشت گردی کیخلاف کارروائیوں کے نتیجے میں دہشت گردوں کی طرف سے افغانستان میں جاری مزاحمت کی کارروائیوں میں مدد، دہشت گردی کی کارروائیوں اور اس مقصد کیلئے پاکستان کی سرزمین استعمال کرنے کی صلاحیت کم ہوئی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ امریکا کی طرف سے پاکستان کو دی گئی امداد نے دہشت گردی کے خاتمے کی کارروائیوں میں کردار ادا کیا ہے اور ہمارا یقین ہے کہ یہ کارروائیاں نا صرف پاکستان اور امریکا بلکہ پورے خطے کے مفاد میں ہیں۔

امریکی ترجمان نے پاکستان کو ایف 16 لڑاکا طیاروں کی فروخت کے حوالے سے ایک امریکی سینیٹر کے خط سے متعلق امریکی اخبار کی خبر پر تبصرہ کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ امریکی محکمہ خارجہ اسلحہ کی مجوزہ فروخت، منتقلی یا حکومت کے ساتھ ابتدائی مشاورت پر کانگریس کی طرف سے باضابطہ نوٹیفکیشن سے قبل کوئی تبصرہ نہیں کرتا، ہم اپنے اتحادیوں اور پارٹنرز کو فوجی امداد کی فراہمی کیلئے کانگریس کے ساتھ مل کر کام کرنے بارے پرعزم ہیں جو مشترکہ چیلنجز سے نمٹنے کی استعداد میں اضافے کی امریکی خارجہ پالیسی کے تحت ہے۔

ایک سوال کے جواب میں امریکی ترجمان نے کہا کہ خطہ میں کوئی اور ملک دہشت گردی سے اتنا متاثر نہیں جتنا پاکستان ہوا، دہشت گردی کیخلاف پاکستان کی مدد امریکا کے اپنے مفادات میں ہے اور ہمیں یقین ہے کہ پاکستان ایک مستحکم اور محفوظ افغانستان کی منزل کے حصول میں خطے میں امریکا کا اہم پارٹنر ہے۔