- الإعلانات -

میٹھے والے مشروبات تمام تر اشیائے خورونوش میں سے بدترین چیز ہیں.نئی تحقیق

میٹھے والے مشروبات (Sugary drinks) کے نقصانات کے متعلق ہم آپ کو بارہا بتا چکے ہیں کہ یہ انسانی صحت پر کس قدر خطرناک اثرات مرتب کرتے ہیں۔ ایک نیوز ویب سائٹ Newsledge.comکی رپورٹ کے مطابق میٹھے والے مشروبات تمام تر اشیائے خورونوش میں سے بدترین چیز ہیں جو آپ اپنے حلق سے نیچے اتارتے ہیں۔ ویب سائٹ نے ایک نئی تحقیق کا حوالہ دیتے ہوئے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ ماﺅنٹین ڈیو کو اگرچہ لوگ مضرصحت نہیں سمجھتے لیکن وہ نہیں جانتے کہ اس میں بھی میٹھے کی مقدار بہت زیادہ ہے جو انسانی صحت کے لیے انتہائی مضر ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ روزانہ 2شوگری ڈرنک پینے سے دل کی بیماریاں لاحق ہونے کا خدشہ 35فیصد بڑھ جاتا ہے، روزانہ کے یہ 2ڈرنکس انسان کے دوسری قسم کی ذیابیطس میں مبتلا ہونے کے چانس کو 25فیصد تک بڑھا دیتے ہیں جبکہ دماغی امراض کا خطرہ 15فیصد تک بڑھ جاتا ہے۔ کوکا کولا اور دیگر تمام شوگری مشروبات ان تین خطرناک بیماریوں کے علاوہ پتے اور پتے کی نالیوں کی پتھری، گنٹھیا اور گردے کی پتھری کا بھی باعث بنتے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق اگر کوئی شخص تصور سے بھی زیادہ تکلیف دہ درد کا تجربہ کرنا چاہتا ہے تو وہ گردے کی پتھری کے مرض میں مبتلا ہو کر دیکھ لے۔ ویب سائٹ کے رپورٹر کا کہنا ہے کہ وہ ایک بار گردے کی پتھری کا درد سہہ چکا ہے اور جب اسے یہ درد ہوتی تھی تو وہ خواہش کرتا تھا کہ کوئی اسے گولی مار دے لیکن کسی طرح یہ تکلیف روک دے۔ رپورٹر کا کہنا ہے کہ اسے بھی گردے کی یہ پتھری سوڈے اور شوگر والے مشروبات ہی کی وجہ سے ہوئی تھی اور اس مرض پر قابو پانے میںڈاکٹروں کو 6ہفتے لگے تھے اور انہوں نے اسے نکالنے کے لیے تین آپریشن کیے تھے۔رپورٹر کا کہنا ہے کہ اب اس تکلیف کا سوچ کر ہی بدن میں کپکپی سی طاری ہو جاتی ہے۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شوگری ڈرنکس پینے سے انسان عموماً موٹاپے کا شکار ہو جاتا ہے، بالخصوص اس کی کمر کے گرد چربی بہت زیادہ بڑھ جاتی ہے۔ یہ موٹاپا بذاتِ خود ایک خطرناک بیماری ہے کیونکہ یہ کئی دیگر بیماریوں کا پیش خیمہ بنتی ہے۔