- الإعلانات -

بازو پر زیادہ تل کینسر کی علامت ہو سکتے ہیں۔ تحقیق

لندن:  انسانی جسم پر ظاہر ہونے والے غیر معمولی نشانات بعض اوقات جسم کے اندر خطرناک بیماریوں کو ظاہر کرتے ہیں اور اس سے لاپرواہی بعض اوقات بڑی بیماریوں کو جنم دے سکتی ہے اسی لیے ایک نئی تحقیق میں خبردار کیا گیا ہے کہ اگر بازو پر تل کے نشان ایک خاص مقدار سے زیادہ ہوجائیں تو یہ اس بات کی علامت ہے کہ آپ کینسر جیسی مہلک بیماری کا شکار ہیں۔ جلدی بیماریوں سے متعلق برطانوی میگزین میں شائع ہونے والی تحقیق میں خبردار کیا گیا ہے کہ اگر کسی کے بازو پر 11 یا اس سے زائد تل موجود ہوں تو اس بات کا خطرہ ہے کہ ایسا شخص جلد کے کینسر کی بیماری میلانوما کا شکار ہو سکتا ہے اس لیے اسے فوری اپنا کینسر کا ٹیسٹ کرانا چاہئے۔ تحقیق میں کہا گیا ہے کہ دائیں ہاتھ پر تلوں کی گنتی کرنے سے پورے جسم کے تلوں کی تعداد کا بھی پتا کیا جا سکتا ہے۔ برطانیہ میں ہر سال تقریباً 13 ہزار افراد جلد کے سرطان میلانوما سے متاثر ہوتے ہیں یہ بیماری عام طور پر بدن میں پائے جانے والے غیر معمولی تل سے پھیلتی ہے اسی لیے میلانوما ہونے کے خطرے کا تعلق تلوں کی تعداد سے ہے، یعنی اگر کسی کو بہت زیادہ تل ہیں تو اسے اس بیماری سے متاثر ہونے کا زیادہ خطرہ بھی ہے۔ لندن میں کنگز کالج کے محققین نے اس کے لیے 8 برس تک بڑی تعداد میں جڑواں لڑکیوں پر کام کیا اور ان کے جسم کی جلدکی نوعیت، اس پر پڑے دھبوں اور تلوں سے متعلق تحقیق کی، اسی دوران میلانوما سے متاثر 400 افراد پر مشتمل مرد اور خواتین کے ایک گروپ پر بھی اس تجربے کو دہرایا گیا جس سے انہیں اس طرح کے سرطان کے خطرے کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کا ایک تیز اور آسان طریقہ مل گیا۔ جن خواتین کے دائیں بازو پر 7 سے زیادہ تل تھے ان کے جسم میں 50 سے زیادہ تل تھے اور انہیں اس بیماری کا خطرہ 9 گنا زیادہ تھا اور جن کے دائیں بازو پر 11 تل تھے ان کے تمام جسم میں 100 سے زائد تل پائے گئے اور اس طرح انہیں اس بیماری کا اور زیادہ خطرہ تھا۔