- الإعلانات -

گنے کے رس کے فوائد

کراچی : برصغیر میں عام پائے جانیوالے گنا کے فوائد سے مستفید ہونے کے لئے یہ بہت کم قیمت میں ہر جگہ دستیاب ہوتا ہے، ہمارے ہاں گنا کے رس میں عام طور پر لیموں، پودینہ، ادارک اور کالا نمک بھی شامل کیا جاتا ہے۔ گنے کا رس مختلف نیوٹرنٹس سے بھرپور ہوتا ہے جو ہماری عمومی صحت پر مثبت اثرات مرتب کرتا ہے۔ اس کے کچھ ایسے ہی فوائد ہیں جن سے ہم لاعلم رہتے ہوئے موسم کے لحاظ سے استعمال کرتے ہیں ۔ گنے کا رس گلہ میں خراش، درد اور نزلہ کے علاج کا بہترین گھریلو ٹوٹکا ہے۔ گنا پٹھوں کی مضبوطی کو برقرار رکھنے کے لئے ضروری قدرتی گلوکوز کی فراہمی کا بہترین ذریعہ ہے۔ بخار میں مبتلا شخص کو ڈاکٹرز خود ہدایات جاری کرتے ہیںکہ مریض کو گنے کا رس پلایا جائے۔ یرقان کے مرض میں مبتلا مریضوں کے لئے گنے کا رس کسی اکسیر سے کم نہیں کیوں کہ یہ جسم میں گلوکوز کی سطح کو مطلوبہ حد تک پہنچا کر مریض کی جلد بحالی میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ نظام انہضام کی بہتری اور قبض کا بہترین علاج گنے کے رس کا استعمال ہے۔ گنا سوکروس نامی شوگر کا حامل ہوتا ہے، جو قدرتی طور پر زخموں کو بھرنے میں معاون ثابت ہونے کے علاوہ قوت مدافعت کو بھی بڑھاتا ہے۔ گنے کا رس دل کے امراض سے حفاظت کا بھی ذریعہ ہے، کیوں کہ یہ جسم مں کولیسٹرول کی سطح کو بڑھنے نہیںدیتا۔ گنے کا رس پیشاب کی نالی میں ہونے والی جلن کا بھی بہترین قدرتی علاج ہے۔ گنے میں قدرتی طور پر الکلوی نامی جزو شامل ہوتا ہے، جو انسانی جسم کو غدود اور چھاتی کے کینسر سے لڑنے کے قابل بنا دیتا ہے۔ گنے کے رس میں چوں کہ کیلشیم اور فاسفورس شامل ہوتا ہے، اس لئے یہ ہڈیوں کی مضبوطی کے لئے نفع بخش ہے۔ خون کی کمی کا شکار افراد گنے کا جوس ضرور پیئں کیوں کہ اس میں آئرن کی اچھی خاصی مقدار پائی جاتی ہے۔ مختلف تحقیقات نے یہ ثابت کیا ہے کہ گنا کا رس گردے و جگر کے لئے نہایت فائدہ مند ہے، یہ قدرتی طور پر جگر اور گردے کی صفائی کرکے ان کے ان کے کام کرنے کی استعداد کو بڑھا دیتا ہے۔