- الإعلانات -

30 منٹ کی ورزش کینسر کے مریضوں کے لیے مفید: تحقیق

ایک حالیہ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ روزانہ کم از کم 30 منٹ پیدل چلنے سے کینسر کے باعث ہونے والی اموات کو 50 فیصد تک کم کیا جاسکتا ہے۔

ہارورڈ یونیورسٹی اور برسبین کی کوئنز لینڈ یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی نے کینسر کے باعث ہونے والی اموات پر  حال ہی میں تحقیق کی جس کے بعد ماہرین کا کہنا ہے کہ روزانہ 30 منٹ پیدل چلنے سے آنتوں اور چھاتی کے سرطان سے موت کے خطرے کو 50 فیصد تک کم کیا جاسکتا ہے۔

ہارورڈ یونیورسٹی کی ٹیم نے اپنی تحقیق میں 992 ایسے مردوں کو شامل کیا گیا جو آنتوں کے کینسر ( اسٹیج تھری) میں مبتلا تھے۔ وہ مریض جنہوں نے روزانہ باقاعدگی سے 30 منٹ پیدل چلنا شروع کیا اور غذائیت سے بھرپور خوراک استعمال کی ان میں 42 فیصد تک موت کا خطرہ کم ہوگیا جب کہ ان کے مقابلے میں معمول کی زندگی گزارنے والے مریض جلد انتقال کرگئے۔

آنتوں کے کینسر پر کی جانے والی تحقیق کو شکاگو میں ہونے والی امریکن سوسائٹی آف کلینکل آنکالوجی کانفرنس میں بھی پیش کیا گیا تھا۔

دوسری تحقیق آسٹریلوی ریسرچر نے 194 ایسی خواتین پر کی جنہوں نے حال ہی میں چھاتی کے سرطان کی سرجری کرائی تھی۔ محققین نے خواتین کو دو گروپوں میں تقسیم کیا اور 8 سال تک ان کا بہت قریب سے مشاہدہ کیا۔

ماہرین کے مطابق ایسی خواتین جنہوں نے باقاعدگی سے 30 منٹ یا اس سے زائد وقت تک پیدل چلنے کو معمول بنایا ان میں موت کی شرح 55 فیصد تک کم رہی جب کہ وہ خواتین جنہوں نے چھاتی کے سرطان کی سرجری کے بعد معمول کے مطابق زندگی گزاری وہ جلد انتقال کر گئیں۔

ریسرچ کے لئے شامل کئے گئے وہ مریض جنہوں نے ورزش اور پیدل چلنے کو اپنی زندگی کا حصہ بنایا ان کا کہنا تھا کہ پیدل چلنا اور زیادہ سے زیادہ سائیکل چلانا ان کی معمول کی سرگرمی تھی جس نے کینسر کے باوجود ان کی عمر کو بڑھانے میں کردار ادا کیا۔

تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر ایرن نے کینسر کے مریضوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ ہفتے میں کم سے کم 150 منٹ ضرور پیدل چلیں اور ڈاکٹروں کو بھی چاہیے کہ وہ مریضوں کو ورزش کی تاکید کریں۔