- الإعلانات -

سرخ گوشت کے زیادہ استعمال سے زندگی کو خطرہ

سرخ گوشت کا بہت زیادہ استعمال زندگی کے خطرہ بن جانے والے فالج کے حملے کا امکان بڑھا دیتا ہے۔یہ انتباہ جرمنی میں ہونے والی ایک نئی طبی تحقیق میں سامنے آیا ہے۔وروزبرگ یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ سرخ گوشت میں پائے جانے والے پروٹین دماغ تک خون پہنچانے والی شریانوں کے بند ہونے کا خطرہ بڑھا دیتے ہیں۔تحقیق کے مطابق جو لوگ سرخ گوشت کا بہت زیادہ استعمال کرتے ہیں ان میں فالج کا خطرہ 47 فیصد تک بڑھ جاتا ہے۔تاہم محققین کا کہنا ہے کہ گائے یا بکرے کے گوشت کا استعمال ترک نہیں کرنا چاہئے تاہم اسے محدود ضرور دینا چاہئے اور خاص طور پر چربی سے پاک گوشت کو ترجیح دینی چاہئے۔تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ مرغی، سی فوڈ یا سبزیوں میں پائے جانے والے پروٹین سے ایسا خطرہ لاحق نہیں ہوتا۔تحقیق کے وران محققین نے 11 ہزار کے لگ بھگ درمیانی عمر کے طبی ڈیٹا کا تجزیہ کیا جن میں فالج کا باعث بننے والے دیگر عناصر جیسے ذیابیطس یا امراض قلب کا شکار نہیں تھے۔محققین کا کہنا ہے کہ جو لوگ کم پروٹین غذا میں استعمال کرتے ہیں ان میں موٹاپے یا کولیسٹرول بڑھنے کا امکان بھی کم ہوتا ہے۔تحقیق میں یہ انتباہ بھی کیا گیا ہے کہ پراسیس شدہ گوشت کا استعمال فالج کا خطرہ بہت زیادہ بڑھاتا ہے جبکہ اس سے شریانوں کے امراض کا امکان بھی بڑھ جاتا ہے جو دل کی بیماریوں میں تبدیل ہوسکتا ہے۔