- الإعلانات -

افغان حکومت اور طالبان کا بات چیت،امن کے لئے مثبت عمل ہے”نواز شریف”

اسلام آباد :وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ افغان حکومت اور طالبان کا بات چیت کا فیصلہ امن کے لئے مثبت عمل ہے۔

افغانستان کی اسمبلی کے اسپیکر عبدالرؤف ابراہیم نے اسلام آباد میں وزیر اعظم نواز شریف سے ملاقات کی۔

ملاقات کے دوران وزیر اعظم نے دہشت گردی کو مشترکہ دشمن قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس دشمن سے نمٹنے کے لیے دونوں ممالک کو مل کر کام کرنا ہوگا جبکہ پاکستان، افغانستان میں امن اور مفاہمت کے لیے مخلصانہ کوششیں کر رہا ہے۔

وزیر اعظم نے تجارت اور معاشی ترقی کے لیے دو طرفہ تعاون کی خواہش بھی ظاہر کی۔

افغان اسمبلی کے اسپیکر عبدالرؤف ابراہیم نے افغان مہاجرین کی 30 سال سے میزبانی کو سراہتے ہوئے پاکستان کا شکریہ ادا کیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز پاکستان، افغانستان، امریکا اور چین پر مشتمل چار فریقی تعاون گروپ (کیو سی جی) نے بھی کابل میں چوتھے اجلاس کے بعد جاری بیان میں افغان حکومت، طالبان اور دوسرے عسکریت پسندوں کے درمیان براہ راست مذاکرات کی بھرپور حمایت کی تھی۔

افغان وزارت خارجہ نے گروپ کو بتایا کہ براہ راست مذاکرات کا پہلا دور مارچ کے پہلے ہفتے میں اسلام آباد میں متوقع ہے۔

دو روز قبل آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے بھی قطر کے دورے کے دوران سیاسی و عسکری قیادت سے افغان امن عمل میں طالبان کے دوحہ میں قائم سیاسی دفتر کے ذریعے کردار ادا کرنے اور حمایت حاصل کرنے کی کوشش کی تھی۔

خیال رہے کہ گزشتہ سال افغان طالبان کے امیر ملا عمر کی موت کی خبر سامنے آنے کے بعد سے طالبان دو بڑے دھڑوں میں تقسیم ہوگئے تھے اور کسی گروپ نے کوئی واضح اشارہ نہیں دیا کہ آیا وہ کابل میں مغربی حمایت یافتہ حکومت کے ساتھ مذاکرات پر رضا مند ہیں بھی یا نہیں۔