- الإعلانات -

وفاق پرویز مشرف کو ایمرجنسی لگانے کا تنہا ذمے دار سمجھتا ہے

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے سنگین غداری کیس میں شامل تفتیش کرنے کے خلاف عبدالحمید ڈوگر کی درخواست منظور کرلی ہے۔

سپریم کورٹ نے خصوصی عدالت کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے عدالت نے کہا ہے کہ کیس میں کسی کو شامل تفتیش کرنے کا اختیار وفاق کا ہے۔

سپریم کورٹ نے خصوصی عدالت کا اکیس نومبر دو ہزار چودہ کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا گیا۔ اس فیصلے میں عبدالحمید ڈوگر، زاہد حامد اور شوکت عزیز کو بطور شریک ملزم شامل کرنے کا حکم دیا گیا تھا۔

عدالت نے قرار دیا کہ ایمرجنسی کے نفاذ کی دستاویزات پر سابق صدر پرویز مشرف کے دستخط موجود ہیں، وفاق پرویز مشرف کو ایمرجنسی لگانے کا تنہا ذمے دار سمجھتا ہے۔ قانون کے مطابق، سنگین غداری مقدمے کی ازسرنو تحقیقات اور کسی کو شامل تفتیش کرنے کا اختیار وفاقی حکومت کا ہے۔

فیصلے میں کہا گیا کہ نئی تحقیقات مکمل ہونے تک خصوصی عدالت کی کارروائی نہیں روکی جا سکتی۔ سپریم کورٹ نے خصوصی عدالت کو پرویز مشرف کے خلاف ٹرائل جاری رکھنے کا حکم دیا جس پر سابق صدر کے وکلا نے تحفظات کا اظہار کیا۔

سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے چوبیس فروری کو فیصلہ محفوظ کیا تھا جس کو آج جسٹس آصف سعید کھوسہ نے پڑھ کر سنایا۔