- الإعلانات -

کراچی، 7 ہزار افراد کے خلاف مقدمہ درج

کراچی : گورنر پنجاب سلمان تاثیر کے قتل کے جرم میں پھانسی پانے والے ممتاز قادری کے حق میں احتجاجی مظاہرہ کرنے پر 7 ہزار افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا۔

پولیس کے مطابق کچھ مذہبی رہنماؤں اور ہزاروں مظاہرین پر گورنر پنجاب کے قاتل کی پھانسی کے خلاف احتجاج، مختلف مکتبہ فکر میں تفرقہ پھیلانے، فسادات اور لاؤڈ اسپیکر کے غلط استعمال کا مقدمہ ریاست کی مدعیت میں سولجر بازار تھانے میں درج کیا گیا۔

پولیس کے مطابق مقدمے میں مفتی غلام غوث، مفتی عابد، مظفر حسین شاہ اور بشیر قادری کو باقاعدہ نامزد کیا گیا ہے جبکہ ان کے ہمراہ 7 ہزار دیگر مظاہرین نے ایم اے جناح روڈ کو بند کیا جبکہ احتجاج کے دوران لاؤڈ اسپیکر کا غلط استعمال کیا گیا اور قومی اداروں کے خلاف نامناسب الفاظ بولے گئے۔

سولجر بازار تھانے کے ایس ایچ او ارشاد سومرو کے مطابق مشتبہ افراد پر پاکستان پینل کوڈ کی مختلف دفعات کےتحت مقدمہ درج کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ سیکشن A-153 (مختلف گروہوں میں تفرقہ پھیلانے کی دفعہ)، دفعہ 147 (دنگا فساد) ، دفعہ 148 (فسادات، خطرناک جان لیوا آتشی ہتھیار)، دفعہ 149 (کسی مقصد کے لیے غیر قانونی اجتماع)، دفعہ 341 (غلط اقدام) سمیت لاؤڈ اسپیکر ایکٹ کے تحت ایف آئی آر درج کی گئی