- الإعلانات -

چیلنجز سے نمٹنے کا نسخہ وسیع تر اتحاد، بلاول بھٹو

اسلام آباد:  پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے ملک میں وسیع تر سیاسی اتحاد کے قیام کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے پیپلز پارٹی،مسلم لیگ(ن) اور تحریک انصاف متحدہ ہو جائیں تو کیا نہیں ہو سکتا؟،ملک کو درپیش چیلنجز سے نمٹنا کسی اکیلی سیاسی جماعت کے بس کی بات نہیں ،دہشتگری کے خاتمے کے لئے تمام جماعتوں کو مل کر کام کرنا ہو گا،سب کو الیکشن جیتنے اور حکمرانی کرنے کی سوچ سے آگے نکلنا ہوگا ،نیب کو چھوڑیں اس پر کوئی بات نہیں ہوگی۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے اسلام آباد میں ایشیا کی سیاسی جماعتوں کی بین الاقوامی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔بلاول بھٹو نے اس وقت ملک کو سنگین چیلنجز کا سامنا ہے جن سے نمٹنے کے لئے قومی اتحاد اور اتفاق رائے کی ضرورت ہے۔ان چیلنجزسے نمٹنا کسی اکیلی سیاسی جماعت کے بس کی بات نہیں ہے بلکہ اس کے لئے اتحاد کی اشد ضرورت ہے، سیاسی جماعتیں متحد ہو کرہی دہشت گردی سے نمٹ سکتی ہیں۔انھوں نے ملک میں وسیع تر سیاسی اتحاد کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ جب پیپلز پارٹی ،مسلم لیگ(ن) اور تحریک انصاف اکٹھی ہو جائیں تو کیا نہیں کر سکتیں ۔ہم سب کو الیکشن جیتنے اور پھر حکمرانی کرنے کی سوچ سے آگے نکل کر ملک کے لئے سوچنا ہو گا۔ ان کا کہنا تھا کہ انسانی اسمگلنگ اکیسویں صدی میں انسانی غلامی کے برابر ہے جہاں اس کے خاتمے کے لیے دنیا کی تمام قوموں کو یکسوئی سے کام کرنا ہوگا۔خطاب کے بعد بلاول بھٹو سے صحافی کی جانب سے نیب کے حوالے سوال پوچھا گیا کہ نیب کے پرکاٹے جارہے ہیں اس پروہ کیا کہنا چاہتے ہیں جس پرانہوں نے جواب دیا کہ نیب کو چھوڑیں اس پر کیا بات کرنی ہے۔میں نیب کے معاملے پر کوئی بات نہیں کروں گا۔