- الإعلانات -

اسلام آباد: ‘غیر ملکیوں’ کے 300 گھر سیل ہونے کا امکان

وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نےمتعدد یاد دہانیوں کے باوجود قانون کے تحت رہائشیوں کی تفصیلات فراہم نہ کرنے پر پولیس کو ہدایت کی تھی کہ ایسے گھروں کے داخلی اور خارجی راستے سیل کر دیے جائیں۔

وزیر داخلہ کی ان ہدایات کے بعد ایسے گھروں کو حتمی نوٹس ارسال کرتے ہوئے بدھ کی شام چھ بجے کی ڈیڈ لائن دی گئی ہے۔ وزارت داخلہ کے ایک بیان میں بتایا گیا کہ ان گھروں میں ’غیر ملکی ‘ مقیم ہیں۔

بیان کے مطابق، سیکیورٹی خدشات کی وجہ سے وزارت داخلہ پچھلے 18 مہینوں سے دارالحکومت میں رہنے والے تمام افراد کی رجسٹریشن کی کوشش کر رہی ہے۔

وزارت داخلہ اور پولیس نے بتایا کہ اس سے قبل غیر ملکیوں کے زیر استعمال 430 گھروں نے نادرا اور پولیس کے گھر گھر سروے کے دوران مکمل تفصیلات دینے سے انکار کر دیا تھا۔

نوٹس پانے والے 300 گھروں میں سے 185 کوہسار جبکہ کم از کم 99 مرگلہ پولیس اسٹیشن کی حدود میں واقع ہیں۔

پولیس کے مطابق، ان گھروں میں امریکی یا پھر یورپی یونین کے شہری رہائش پزیر ہیں۔

ایک پولیس افسر نے بتایا کہ اس مرتبہ اگر غیر ملکیوں نے نوٹس نظر انداز کیے تو پھر ان گھروں کو خاک داروں سے سیل اور لاک کر دیا جائے گا۔