- الإعلانات -

عمران خان پاک بھارت میچ سے پہلے کیا کریں گے ۔ ۔ ۔

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ شاہدآفریدی نے کہا تھا بڑا میچ ہے مشورہ دیں اس لئے میچ سے قبل کھلاڑیوں سے ملاقات کر کے اپنے تجربے کی روشنی میں انہیں مشورے دوں گا، ہماچل پردیش میں میچ بالکل بھی نہیں کھیلنا چاہئے تھا، نفرت کی سیاست کمزو ر سیاستدانوں کی نشانی ہے۔پرویز مشرف کے باہر جانے پر صرف اتنا ہی کہوں گا کہ نادان گر گیا سجدے میں جب وقت قیام آیا۔تفصیلات کے مطابق بھارت روانگی سے قبل بنی گالہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان انتہائی خوشگوار موڈ میں نظر آئے۔ ان کاکہنا تھا کہ آج کیمرے تو ایسے آئے ہوئے ہیں کہ جیسے میں میچ کھیلنے جا رہا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ پاک بھارت میچ میں بہت پریشر ہوتا ہے اور پوری قوم ٹی وی کے سامنے بیٹھی ہوتی ہے اور اگر خدانخواستہ شکست ہو جائے تو پھر دکھ بھی ہوتا ہے۔ عمران خان نے کہا کہ شاہد آفریدی نے ان سے رابطہ کر کے مشورہ طلب کیا تھا اس لئے بھارت کیساتھ میچ سے قبل کھلاڑیوں کیساتھ ملاقات کروں گا اور کوشش ہوگی کہ اپنے تجربے کی روشنی میں پاکستان ٹیم کو مشورہ دوں۔ان کا کہنا تھا کہ بھارتی وزیراعلیٰ کا بیان مہمان نوازی کے تقاضوں کے خلاف ہے اس لئے ہماچل پردیش میں بالکل بھی میچ نہیں کھیلنا چاہئے تھا۔ انہوں نے کہا کہ کلکتہ میں پاکستانی ٹیم کو اچھی پذیرائی ملی ہے جبکہ کلکتہ کے وزیراعلیٰ نے مجھے ملاقات کی دعوت بھی دی ہے۔ بھارت کیساتھ بات چیت کے ذریعے مسائل حل کریں گے کیونکہ نفرت کی سیاست کمزور سیاستدانوں کی نشانی ہے۔ ایک سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا کہ شیخ رشید نے ہمارے ساتھ جانا تھا لیکن وہ پہلے چلے گئے ہیں جبکہ طاہر القادری کے بارے میں مجھے نہیں معلوم کہ وہ بھارت میں ہیں یا نہیں۔پرویز مشرف کے دبئی جانے سے متعلق سوال پر عمران خان نے حیرانگی کا اظہار کیا اور کہا کہ نواز شریف تو بڑے بڑے دعوے کرتے تھے اور آرٹیکل 6 کا بڑا شور مچایا گیا تھا لیکن اب اگر وہ چلے ہی گئے ہیں تو صرف اتنا ہی کہوں گا کہ ”نادان گر گیا سجدے میں جب وقت قیام آیا