- الإعلانات -

چوہدری برادراور ایم کیو ایم کہیں نہیں جارہے’ وہ اتحادی رہیں گے شیخ رشید احمد

وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ چوہدری برادراور ایم کیو ایم کہیں نہیں جارہے’ وہ اتحادی رہیں گے’ پاکستان مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی ختم ہو چکی ہے’ ہماری اپوزیشن صرف مہنگائی ہے جسے عمران خان کی قیادت میں ختم کرینگے’ کراچی سرکلر ریلوے کامسئلہ سندھ حکومت اور مکینوں کے ساتھ مل بیٹھ کر طے کرینگے۔ وہ ہفتہ کے روز ریلوے ہیڈ کوارٹرز لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ شیخ رشید احمد نے کہا کہ تیز گام حادثہ کی مزید تحقیقات کیلئے 3 اے جی ایم پر مشتمل کمیٹی بنا دی گئی ہے جو واقعہ کے خدوخال کا جائزہ لے گی’ واقعہ کے ذمہ داروں کو سزائیں دی جائیں گی’ واقعہ کی کمیٹی کی طرف سے ٹھوس رپورٹ نہیں دی گئی۔انہوں نے کہا کہ واقعہ کی انکوائری میں ہم نے غیر جانبداری کامظاہرہ کیا ، کمیٹی کی رپورٹ کو روکنے کی کوشش نہیں کی اور نہ ہی اس پراثر انداز ہوئے ۔ ایک سوال پر وفاقی وزیر نے کہا کہ چوہدری برادران کے بیانات سے حیرانگی ہو رہی ہے’آئندہ ہفتے ان سے ملوں گا تاہم وہ کہیں نہیں جارہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان ریلوے کی ہماری دور کی آڈٹ رپورٹ ابھی تک جمع نہیں ہوئی’ ریلوے کی کارکردگی کے حوالے سے جو آڈٹ رپورٹ زیر بحث آئی اس سے ہمارا کوئی تعلق نہیں ، جب نئی آڈٹ رپورٹ جمع ہو گی تو اس میں ہمیں مورد الزام ٹھہرایا جاسکتا ہے۔ نواز شریف کی واپسی کے حوالے سے سوال کے جواب میں وزیر ریلوے نے کہا کہ نواز شریف نے آنا نہیں’ مریم نواز نے جانا نہیں البتہ شہباز شریف واپس آسکتے ہیں۔ کراچی سرکلر ریلوے کے حوالے سے سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم کو آگاہ کر دیا ہے کہ 15 روز میں کے سی آر خالی کرنا آسانا کام نہیں لیکن وزیر اعظم کی بھی یہی ہدایات ہیں کہ عدالت عظمیٰ کو مطمئن کیاجائے۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر خالی کروانے کیلئے تیار ہیں’ سپریم کورٹ کی ہدایت کی روشنی میں وزیر اعلیٰ سندھ سے ملاقات ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ پہلے کے سی آر کا38 کلومیٹر خالی کروایا گیا، اب 6 کلومیٹر باقی ہے’ سپریم کورٹ نے اسے 15 دن میں بحال کرنے کا نوٹس دیا ہے جو مشکل کام ہے تاہم سندھ حکومت کے تعاون سے اس پر عملدرآمد کروایا جائیگا۔ یوم کشمیر پر اپنا پیغام دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کشمیر زندہ ہے اور رہے گا جب تک ایک بھی کشمیری زندہ ہے یا وہاں کشمیریوں کا قبرستان آباد ہے دنیا کی کوئی طاقت جدوجہد آزادی کشمیر کو دبا نہیں سکتی’5 فروری کو لال حویلی میں تاریخی جلسہ اور ریلی کا انعقادکرینگے’ ریلوے کے پنشنرز کا معاملہ ای سی سی میں لے کر جارہے ہیں’ ہماری کوشش ہے کہ ریلوے کی پنشن حکومت براہ راستے اپنے ذمہ لے تاکہ ریلوے کا خسارہ بھی کم ہو سکے۔ شیخ رشید احمد نے کہا کہ 15 فروری کو گوجرانوالہ سے لاہور شٹل ٹرین چلائی جائیگی جبکہ مغلپورہ ڈرائی پورٹ کو بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ ازا خیل کے بعدچشتیاں’ کندیاں’ شیخوپورہ’ چھانگا مانگا ڈرائی پورٹس میں بہتر لائی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریلوے میں رواں سال فریٹ اور لینڈ کا سال قرار دیا ہے جس میں ٹارگٹ سے اوپر جارہے ہیں’ اسی طرح پسنجر سیکٹر میں بھی ابھی تک ٹارگٹ سے آگے ہیں۔ وزیر ریلوے نے کہا کہ 75 نئی چائنیز کوچز کو ری نیو کرکے 4 ٹرینوں میں نئی کوچز لگائیں گے’ اس طرح فریٹ ویگنز میں بھی 300 کوچز ری نیو کرکے لگائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ریلوے کے ہسپتال اور سکول بہترین کام کر رہے ہیں جبکہ نجی شعبہ سے مل کر ان کو مزید بہتر کر رہے ہیں