- الإعلانات -

معاشی ٹیموں، سرکاری افسروں کے بعد سیاسی مذاکراتی ٹیموں میں بار بار کی تبدیلیاں؟؟ تبدیلی اچھی بات ہے، مگر با ر بار کی تبدیلی اچھی عادت نہیں ہے

 ٹویٹ کرتے ہوئے مونس الٰہی کا کہنا تھا کہ معاشی ٹیموں، سرکاری افسروں کے بعد سیاسی مذاکراتی ٹیموں میں بار بار کی تبدیلیاں؟؟ تبدیلی اچھی بات ہے، مگر با ر بار کی تبدیلی اچھی عادت نہیں ہے، معیشت، حکومت اور سیاست میں پی ٹی آئی مستقل مزاجی لائے۔

یاد رہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے   ناراض  اتحادی جماعتوں کے تحفظات دور کرنے کے لئے تیسری بار مذاکراتی کمیٹی میں تبدیلی کی ہے جس پر چوہدری پرویز الٰہی نے بھی گذشتہ روز سخت  تنقید کی تھی