- الإعلانات -

معاون خصوصی اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا تنازعات اور میڈیا کے کردار کے حوالے سے بین الاقوامی کانفرنس سے خطاب

وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ امن اور بقاءکے لئے سوشل اور ڈیجیٹل میڈیا کی موثر نگرانی کا فیصلہ کیا گیا ہے، بخوبی آگاہ ہیں کہ بعض شر پسند عناصر اپنے مذموم مقاصد کے لئے ڈیجیٹل اور سوشل میڈیا کا بے دریغ استعمال کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، حکومت تیز رفتار مواصلات اور ڈیجیٹل جدت اور معاشرتی تبدیلیوں کے ایک موثر میکنزم کے ذریعے سہولت کار کا کردار ادا کرنے جاری ہے، پاکستانی قوم نے حکومت، مقننہ ،قانون نافذ کرنے والے اداروں اور مسلح افواج کے ساتھ ملکر معاشرے سے نفرت، تعصب اور تشدد کو دور کر کے ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کیا گیا، ہم امن قائم کرنے کی ان کوششوں کو ڈیجیٹل سپیس سمیت دیگر تمام محاذوں تک وسعت دینے کے خواہاں ہیں جو اس وقت معاشرے کے اہم رجحانات کے طور پر ابھرا ہے ۔ وہ منگل کو تنازعات اور میڈیا کے کردار کے حوالے سے بین الاقوامی کانفرنس سے خطاب کررہیں تھیں ۔ وفاقی سیکرٹری وزارت اطلاعات و نشریات اکبر حسین درانی نے بھی کانفرنس سے خطاب کیا ۔وزیراعظم کی معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ پاکستان نے اپنے معاشرے میں انتہا پسندی اور نفرت کے خاتمے کیلئے قابل تقلید اقدامات کیے، بعض عناصر اپنے مقاصد کے حصول کیلئے ڈیجیٹل میڈیا کا غلط استعمال کر رہے ہیں، ہمیں سوشل میڈیا پر نفرت ،انتہا پسندی اور دہشت گردی کے پھیلاو¿ کو روکنا ہو گا۔ معاون خصوصی نے کہا کہ یہ کانفرنس معاشرے میں پائیدار امن، بین المذاہب ہم آہنگی اورمعاشرتی ہم آہنگی کو فروغ دینے کے لئے حکومت پاکستان کے ویژن کی عکاس ہے، بحیثیت قوم نا صرف اندرون ملک ،علاقائی اور عالمی سطح پر عالمی اندرون ملک اور عالمی سطح پر قیام امن کے لئے ہمیں اپنی ان کاوشوں پر فخر ہے ، ہم نے دہشت گردی کے خلاف طویل جنگ میں دہشت گردورں کے منظم نیٹ ورکس کو شکست دیتے ہوئے ان نیٹ ورکس کو ناصرف ختم کیا بلکہ اپنی نظریاتی اور دفاعی سرحدوں کا بھی دفاع کیا گیا اسکے ساتھ ساتھ عالمی امن کو بھی تحفظ فراہم کیا گیا ،ایک ذمہ دار عالمی شہری ہونے کی حیثیت سے اپنی ذمہ داروں کو تسلیم کرتے ہیں اور ان کو نبھانے کے لئے کوشاں ہیں ،ہمیں خوشی ہے کہ دنیا ہمیں ہم آہنگی پیدا کرنے والا ملک تسلیم کرتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان ہر شہری کو اس استحکام کاثمرفراہم کرنے کی خواہاں ہے کیونکہ خوشحال اور پرامن زندگی ان کا آئینی حق ہے اور ہم اس بات کو یقینی بنانے میں پرعزم ہیں کہ معاشرے میں رواداری اور باہمی قبولیت جیسی اقدار کو فروغ حاصل ہو ، ہر شہری نے اپنے معاشرے میں انتہا پسندی اور نفرت کے خاتمے کیلئے قابل تقلید اقدامات کیے۔ بعض عناصر اپنے مقاصد کے حصول کیلئے ڈیجیٹل میڈیا کا غلط استعمال کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں سوشل میڈیا پر نفرت ،انتہا پسندی اور دہشت گردی کے پھیلاو¿ کو روکنا ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان امن پسند ملک ہے جس نے دہشت گردی کے خلاف کامیاب جنگ لڑی۔ پاکستان علاقائی اور عالمی سطح پر امن کا داعی رہا ہے۔ فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ ہم مذہب ،نسل یا رنگ کی بنیاد پر شہریوں کے حقوق میں تفریق پر یقین نہیں رکھتے۔ پاکستان نے دہشتگردوں کے منظم نیٹ ورک کو ختم کیا۔ انہوں نے کہا کہ دنیا پاکستان کو امن اور ہم آہنگی کو فروغ دینے والا ملک تصور کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی قوم نے حکومت ،مقننہ ،قانون نافذ کرنے والے اداروں اور مسلح افواج کے ساتھ ملکر معاشرے سے نفرت ،تعصب اور تشدد کو دور کر کے ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کیا گیا ، ہم امن قائم کرنے کی ان کوششوں کو ڈیجیٹل سپیس سمیت دیگر تمام محاذوں تک وسعت دینے کے خواہاں ہیں جو اس وقت معاشرے کے اہم رجحانات کے طور پر ابھرا ہے ،آن لائن گفتگو کا معاشرے ،میڈیا اور پالیسی ساز نظام پر اثر پڑتا ہے ،ضروری ہے کہ امن اور بقاءکے لئے اس شعبے کی نگرانی کی جائے ،بخوبی آگاہ کہ بعض شر پسند عناصر اپنے مذموم مقاصد کے لئے ڈیجٹیل اور سوشل میڈیا کا بے دریغ استعمال کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ،ہم سب کو تیز رفتار مواصلات اور ڈیجٹیل جدت اور معاشرتی تبدیلیوں کے ایک موثر میکنزم کے زریعے ان کے سہولت کار کا کردار ادا کرنا چاہ رہے ہیں ،ماضی میں شر پسندوں نے معاشرے اور ڈیجٹیل میڈیا کو نفرت کے فروغ کے لئے بے جا استعمال کیا معصوم نوجوانوں کو شامل کیا تا کہ بنیاد پرست بنا کر ان پر پرتشدد بیانات کو پوری دنیا میں پھیلائیں ،حالیہ کرائس چرچ حملے میں مذموم مقاصد کے لئے برائے راست نشر کیا گیا ،مخالفین کے خلاف غلط اطلاعات، مواد کو پھیلانے کے لئے سوشل میڈیا کا استعمال کیا جارہا ہے ، اس سے نمٹنے کے لئے طریقے ڈھونڈے جارہے ہیں ،ہم چند اقوام میں ہیں جنہوں نے جعلی خبروں ،پرتشد انتہا پسندی اور نفرت انگیز تقاریر کا تدارک کی