- الإعلانات -

بلاول بھٹو کے قافلے میں موجود2 گاڑیاں آپس میں ٹکراگئیں

میڈیارپورٹس کے مطابق پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری جے وی ای پل کیس میںنیب راولپنڈی آفس پیش ہوگئے،نیب راولپنڈی اورنیب اولڈہیڈکوارٹرز کے سکیورٹی کے انتظامات مکمل کرلئے ہیں ،بلاول بھٹو کی پیشی کے موقع پر پولیس کی بھاری نفری تعینات ہے۔

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو پرذاتی کمپنی کےلئے1 اعشاریہ 22 ارب روپے جعلی اکاوَنٹ سے نکلوانے کا الزام ہے،چیئرمین نیب نے انکوائری کو انوسٹی گیشن میں تبدیل کرنے کی منظوری دی تھی،بلاول بھٹو زرداری کو زرداری گروپ کمپنی کا2008سے2019تک تمام ریکارڈلانےکی ہدایت کی گئی تھی،نیب راولپنڈی نے زرداری گروپ کمپنی کے بورڈآف ڈائریکٹرزکی فہرست بھی مانگی تھی۔

میڈیارپورٹس کے مطابق بلاول بھٹو کے تحریری بیان اور ایف بی آر سے حاصل ریکارڈ میں تضاد طلبی کاباعث بنا،نیب کاکہناہے کہ نیب کو حاصل ریکارڈ اوردستاویزکے مطابق بلاول بھٹو کا موقف درست نہیں پایاگیاجبکہ بلاول بھٹو کا موقف ہے کہ سیاسی اورتعلیمی مصروفیت کے باعث بیرون ملک رہا ،زرداری گروپ لمیٹڈکے کسی بھی اجلاس میں کبھی شریک نہیں ہوا ۔

نیب کاکہناہے کہ معاہدے کے وقت بلاول بھٹو پاکستان میں تھے ،کمپنی کے آڈٹ اکاﺅنٹس پر دستخط بھی کئے ،ایف بی آر کے پاس موجود ریکارڈ بھی بلاول بھٹو کے موقف کی نفی کرتا ہے