- الإعلانات -

نیب پر حکومت کا کوئی اختیار نہیں، احتساب کے قانون میں کوئی سقم ہے تو ہم اس پر بات کرنے کو تیار ہیں چوہدری فواد حسین

 وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی چوہدری فواد حسین نے کہا ہے کہ نیب پر حکومت کا کوئی اختیار نہیں، احتساب کے قانون میں کوئی سقم ہے تو ہم اس پر بات کرنے کو تیار ہیں، آصف زرداری پر بنائے گئے کیسز ہمارے دور کے نہیں۔ جمعرات کو میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ دونوں بڑی اپوزیشن جماعتیں مسودے پر الجھ رہی ہیں، پارلیمنٹ میں ذاتیات پر اتر آئیں تو ماحول خراب ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ احتساب کے قانون میں کوئی سقم ہے تو ہم اس پر بات کرنے کو تیار ہیں، آصف زرداری پر اربوں روپے کی کرپشن کے مقدمے ہیں، نیب پر حکومت کا کوئی اختیار نہیں، آصف زرداری پر بنائے گئے کیسز ہمارے دور کے نہیں، جمہوریت میں ایک دوسرے کو برداشت کرکے چلنا ہوتا ہے۔ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹل میڈیا فارمل میڈیا کی جگہ لے رہا ہے، ریگولیٹ کرنا وقت کی ضرورت ہے۔ قبل ازیں وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی چوہدری فواد حسین سے مرکزی انجمن تاجران جہلم کے دونوں گروپوں کے نمائندوں کے وفد نے یہاں ملاقات کی۔ ملاقات میں مرکزی انجمن تاجران کے دونوں گروپ کے نمائندوں نے شرکت کی۔ تاجروں کو درپیش مسائل اور میونسپل کارپوریشن جہلم کے کرایہ داران اور دکانوں کی نیلامی کے علاوہ دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر چوہدری فواد حسین نے کہا کہ سابقہ حکمرانوں نے ملکی معشیت اور اداروں کو دیوالیہ کر دیا، ہم سب کا فرض ہے کہ ملکی ترقی اور معیشت کو بہتر بنانے کےلئے اپنا کردار ادا کریں۔ وفاقی وزیر نے میونسپل کارپوریشن کی ملکیتی دکانوں کے کرایہ اور نیلامی کے علاوہ ایسسمنٹ کے متعلق تاجروں کے مسائل سنے اور کہا کہ تاجروں کے دونوں گروپ آپس میں بیٹھ کر اس مسئلے کا حل تلاش کریں لیکن اس میں سرکاری خزانہ کی بہتری کو بھی مدنظر رکھا جائے۔ انہوں نے کہا کہ میونسپل کارپوریشن کی ملکیتی تین سو سے زائد دکانوں کا سالانہ کرایہ 92 لاکھ روپے آ رہا تھا جو نیلامی میں بڑھ کر 12 کروڑ تک پہنچ گیا ہے اب اس کو سات ساڑھے سات کروڑ تک تو کیا جا سکتا ہے لیکن اس سے کم سرکاری خزانہ کو نقصان ہے