- الإعلانات -

ریاست مدینہ پہلے دن ہی نہیں بن گئی تھی بلکہ ایک سفر تھا جس میں تین چار سال تک ریاست کو مشکلات کا سامنا تھا ،پاکستان بھی فلاحی ریاست بننے کی جانب گامزن ہے ۔ عمران خان

لاہور میں ہیلتھ کارڈ کے اجراءسے متعلق ایک تقریب میں خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ انہوں نے میو ہسپتال میں ایک غریب آدمی کو دیکھ کر فیصلہ کیا تھا کہ کرکٹ کے بعد اپنی زندگی لوگوں کی بہتری کے لیے گزاریں گے ۔ان کا کہنا تھا کہ خیبر پختونخواہ کے لوگ کسی کو دوسری بار موقع نہیں دیتے لیکن ہمیں دوسری بار دو تہائی اکثریت سے جیت دلائی ،اس کی وجہ ہیلتھ انشورنس کارڈ تھے کیونکہ پہلی بار لوگوں کو پتہ لگا کہ فلاحی ریاست کیا ہوتی ہے ۔

وزیراعظم نے کہا کہ کئی چینلز پراپیگنڈہ کر رہے ،وہ غریب لوگوں کے پاس جا کر پوچھتے ہیں ،مہنگائی کی کیا صورتحال ہے ؟غریب لوگ جواب دیتے ہیں کہ مہنگائی بہت بڑھ گئی ہے ،پھر میڈ یا پوچھتا ہے کہ نیا پاکستان کیسا لگا تو بے چارہ غریب حکومت کو برا بھلا کہتا ہے ،یہ سب ایک منصوبہ بندی کے تحت ہو رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ مدینہ کی ریاست بھی پہلے دن نہیں بن گئی تھی بلکہ تین چار سال ایک مشکل دور سے گزری تھی ۔عمران خان نے کہا کہ ہم نے پہلی بار ہیلتھ سے متعلق امپورٹ پر مکمل طور پر ڈیوٹی ختم کردی ہے تاکہ پرائیویٹ ہسپتال بنائے جا سکیں کیونکہ ہسپتال بہت کم ہیں اور سرکاری ہسپتال بہت زیادہ نہیں بنائے جا سکتے ۔ان کا کہنا تھا کہ ہم ہسپتالوں کی مینجمنٹ کا سسٹم بھی بہتر کر رہے ہیں