- الإعلانات -

سمجھوتہ ایکسپریس دہشت گرد حملوں کے متاثرین ابھی تک انصاف کی راہ تک رہے ہیں، ترجمان دفتر خارجہ

 (اے پی پی)پاکستان نے سمجھوتہ ایکسپریس بم دھماکوں کے متاثرین کو انصاف کی فراہمی کے مطالبے کا اعادہ کیا ہے۔ دفتر خارجہ کے ترجمان نے منگل کو یہاں جاری بیان میں کہا کہ سمجھوتہ ایکسپریس دہشت گرد حملوں کے متاثرین ابھی تک انصاف کی راہ تک رہے ہیں، 13 سال قبل 18 فروری کو دہلی اور لاہور کے درمیان چلنے والی سمجھوتہ ایکسپریس میں بم دھماکوں کے نتیجہ میں 68 مسافر جاں بحق ہو گئے تھے جن میں40 پاکستانی شہری بھی شامل تھے۔ ترجمان نے کہا کہ اس سانحے کے متاثرین کو شواہد کی موجودگی کے باوجود انصاف کی فراہمی میں تاخیر بھارتی حکومت کی جانب سے اس واقعہ کے ذمہ داروں کو اپنی بربریت کے لئے انصاف کے کٹہرے میں نہ لانے کے عزم کی عکاسی کرتی ہے۔ ترجمان نے کہا کہ گزشتہ سال اس حملے کے ماسٹر مائنڈ سوامی آسی مانند اور دیگر ملزمان کی بریت سے بھارت میں آر ایس ایس اور بی جے پی کے زیر نگرانی ہندواتوا پر مبنی نظریئے کے تحت دہشت گرد حملوں کے ذمہ داروں کو کھلی چھوٹ دینے کی عکاسی ہوتی ہے۔ ترجمان نے کہا کہ پاکستان اس سانحہ کی برسی کے موقع پر متاثرہ خاندانوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتا ہے اور بھارت کی حکومت کو اس کی ذمہ داری باور کراتا ہے کہ وہ سمجھوتہ ایکسپریس دھماکوں کے ملزمان کو جلد از جلد انصاف کے کٹہرے میں لانے کی اپنی ذمہ داری پوری کرے