- الإعلانات -

شکر پڑیاں لوک میلہ ،چائلڈ فوک گلوکاروں کے فن کامظاہرہ،حاضرین جھوم اٹھے

اسلام آباد ۔ وفاقی دارلحکومت اسلام آباد میں جاری دس روزہ لوک میلہ کے تیسرے دن کی شام چائلڈ اسٹارگلوکاروں کے نام سے( ایمرجنگ چائلڈ فوک سٹار ز ) منعقدہ ہوئی ۔جس میں لوک میلہ میں آئے ہوئے لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی اور نو عمر لوک گلوکاروں کی گائیگی سے لطف اندوز ہوئے۔ ملک کے چاروں صوبو ں اور کشمیر ،گلگت،، بلتستان سے آئے ہوئے نوعمر چائلڈ اسٹارز اس میں نے شرکت کی۔ ڈائریکٹر لوک ورثہ ڈاکٹر فوزیہ سعید نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لوک میلہ 2016 پاکستان کی علاقائی موسیقی، فوک گائیک اورموسیقی سے وابستہ فنکاروں کی شناخت اور فروغ میں اہم کردار ادا کر رہا ہے۔ یہ نو عمر چائلڈ فوک اسٹارز ہماری فوک موسیقی کا سرمایہ ثابت ہوں گئے۔ ہمیں ان بچوں پر فخر ہے یہ نو عمر گلوکار فوک موسیقی کا مستقبل ہیں آج کی یہ تقریب دینا کو پیغام دے رہی ہے کہ پاکستانی بچے اپنی ثقافت اور موسیقی سے لگاﺅ رکھتے ہیں ۔پاکستان فوک موسیقی بہت رنگارنگ اور دلنشین اور میٹھی ہے۔ چائلڈ فوک سنگر زمین نے دوپشیو گانے جاناںجاناں اور بی بی شیریں گا کرشرکاءمحفل کو جھومنے پر مجبور کر دیا۔ حافظ آباد پنجاب کی نو عمر فوک سنگر مسکان خوشاہی نے پنجابی گانے گا ئے، گل محمد نے بروہی، جہانگیر نے سرائیکی، موینہ اور ساتھیوں نے گلگت، بلتستان میں بولی جانے والی زبان شینامیں، سمیرا علی اور ذیشان علی نے سندھی، عاصم خان نے بلوچی گیت، سونیا بی بی نے پشتو گیت ،زاوار حسین نے مارواڑی گیت، اشعر، سجان، مزمل نے پنجابی زبان میں گیت پیش کئے۔ان نوعمر فوک سنگررز کی پرفارمنس نے موسیقی کی تقریب کوگرما دیا اور شرکاءمحفل جھومنے لگے۔پروگرام کے آغاز میں ڈائریکٹر لوک ورثہ ڈاکٹر فوزیہ سعید نے تقریب کے مہمان خصوصی ماہر موسیقی اور موسیقی پر متعدد کتابوں کے مضنف ایس ایم شاہد کا تعارف کرایااور مہمان خصوصی ایس ایم شاہد کو پھولوں کا گلاستہ بھی پیش کیا۔