- الإعلانات -

پاکستان بامقصد امن مذاکرات کے ذریعے مسئلہ کشمیر سمیت بھارت کے ساتھ تمام تنازعات حل کرنا چاہتا ہے،سید فخر امام

 چیئرمین کشمیر کمیٹی سید فخر امام نے کہا ہے کہ پاکستان بامقصد امن مذاکرات کے عمل کے ذریعے مسئلہ کشمیر سمیت بھارت کے ساتھ تمام تنازعات کو حل کرنا چاہتا ہے۔ جمعہ ریڈیو کرنٹ افیئر پروگرام میں گفتگو کے دوران انہوں نے کہا کہ پاکستان کے پاس تمام کشمیری معاملات کو بات چیت کے ذریعے حل کرنے کے لئے تجاویز ہیں جبکہ بھارت خطے میں تسلط قائم کرنا چاہتا ہے۔ انہوں نے بھارتی جبر اور انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزیوں کے بارے میں تاریخ میں کوئی دوسری مثال نہیں ملتی تاہم بھارت میں مسلمانوں کے ساتھ جو کچھ کررہا ہے دنیا بھر میںاس کی شدید مذمت کی جارہی ہے۔ فخر امام نے کہا کہ متعدد کشمیریوں کو شہید ، متعدد کو بھارتی فورسز نے گرفتار اور مختلف شہروں میں بند کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی فورسز نے معصوم اور غیر مسلح کشمیریوں کے خلاف پیلٹ گن اور کلسٹر بم کا استعمال کیا ہے، واشنگٹن پوسٹ ، نیویارک ٹائمز ، گارڈین سمیت دنیا کے نامور میڈیا ایسی بھارتی پالیسیوں کے خلاف رپورٹنگ کررہے ہیں جس نے عوام کی رائے کو بھارت کے خلاف تبدیل کردیا ہے۔ فخر امام نے کہا کہ مختلف ممالک کی پارلیمنٹس نے بھی کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے بارے میں قراردادیں منظور کی ہیں۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے 54 سال کے وقفے کے بعد مسئلہ کشمیر کے ایجنڈے پر مسلسل بات چیت کی۔ امریکی صدر ٹرمپ نے بھارت میں عوامی خطاب میں دہشت گردی کے خلاف پاکستان کے کردار کو بھی تسلیم کیا ہے۔ فخر امام نے کہا کہ ملک میں 60 فیصد سے زیادہ آبادی زراعت کے شعبے پر انحصار کرتی ہے، موجودہ حکومت کی ترجیح ہے کہ وہ اس شعبے کو بہتر بنائے اور ہر طرح سے کاشتکاروں کو سہولیات فراہم کرے۔ زراعت کے شعبے میں بہتری لانے کے لئے خاطر خواہ بجٹ مختص کیا جائے گا تاکہ پیداواری صلاحیت میں اضافہ ہو اور کسانوں کو ان کی کوششوں کی قیمت ملنی چاہیے