- الإعلانات -

لاک ڈاؤن کے مثبت اثرات مرتب ہو رہے ہیں اور کرونا وائرس کے مریضوں کی تعدادبڑھنے کے جو اندازے لگائے گئے تھے اس سے تعداد بہت کم ہے، صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے علماء کرام اور عوام کے تعاون کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ لاک ڈاؤن کے مثبت اثرات مرتب ہو رہے ہیں اور کرونا وائرس کے مریضوں کی تعدادبڑھنے کے جو اندازے لگائے گئے تھے اس سے تعداد بہت کم ہے۔ مقدس مہینہ رمضان کی آمد آمد ہے ماہ مقدسہ میں بھی سماجی فاصلے کو برقرار رکھنے کی ضرورت ہے۔ گلگت بلتستان میں یوٹیلٹی سٹورز کے سامان کی سپلائی کی خود مانیٹرنگ کروں گا اور متعلقہ اداروں سے یو ٹیلٹی سٹورز کو بروقت سامان کی فراہمی یقینی بنائی جائے گی۔اتوار کوصدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی ایک روزہ دورہ پر گلگت پہنچے۔ گورنر گلگت بلتستان راجہ جلال حسین مقپون’ معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا’ وزیر اعظم کے خصوصی مشیر عثمان ڈار اور چیئر مین این ڈی ایم اے لیفٹننٹ جنرل محمدافضل بھی ان کے ہمراہ تھے۔ گلگت ائرپورٹ پر وزیر اعلی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمان’ چیف سیکریٹری اور فورس کمانڈر سمیت دیگر اعلی حکام نے صدر مملکت کا استقبال کیا۔صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے گلگت میں کرونا وائرس کی موجودہ صورتحال کے سلسلے میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے گلگت بلتستان حکومت اور انتظامیہ کی کرونا وائرس کے خلاف اقدامات پر مبار کباد پیش کی کہ حکومت اور انتظامیہ کی محنت کانتیجہ ہے کہ گلگت بلتستان میں کرونا وائرس کے 216 مریضوں میں سے صرف 67 مریض رہ گئے ہیں بقیہ تمام صحت یاب ہو چکے ہیں انہوں نے کہا کہ این ڈی ایم اے کی جانب سے 15 ہزار ٹیسٹنگ کٹس فراہم کئے گئے ہیں اور ہسپتالوں کے لئے دیگر جدید سامان بھی فراہم کیاجارہا ہے۔ صدر مملکت نے علمائ کرام اور عوام کے تعاون کو سراہتے کو کہا کہ لاک ڈاؤن کے مثبت اثرات مرتب ہو رہے ہیں اور کرونا وائرس کے مریضوں کی تعدادبڑھنے کے جو اندازے لگائے گئے تھے اس سے تعداد بہت کم ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ گلگت بلتستان میں یوٹیلٹی سٹورز کے سامان کی سپلائی کی خود مانیٹرنگ کروں گا اور متعلقہ اداروں سے یو ٹیلٹی سٹورز کو بروقت سامان کی فراہمی یقینی بنائی جائے گی۔ صدر مملکت نے کہا کہ مقدس مہینہ رمضان کی آمد آمد ہے ماہ مقدسہ میں بھی سماجی فاصلے کو برقرار رکھنے کی ضرورت ہے۔ تقریب کے دوران معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان میں کرونا وائرس کے مریضوں کی تیزی سے صحت یابی ایک کامیاب سٹور ی ہے یہاں پر 2ہزار سے زائد زائرین آئے حکومت اور انتظامیہ نے تمام زائرین کی سکریننگ کی ہے۔ جو کہ قابل تحسین اقدام ہے انہوں نے کہا کہ ملک میں اب تک 42 ہزار افراد سے زیادہ کے کرونا وائرس ٹیسٹ کئے گئے ہیں ملک میں موجود لیبارٹریز میں روزانہ ٹیسٹ کرنے کی استعداد کم تھی جو کہ 30 اپریل تک بڑھ کر 25 ہزار ٹیسٹ روزانہ تک پہنچ جائے۔ وزیر اعظم کے خصوصی مشیر برائے امور نوجوانان عثمان ڈار نے خطاب کرتے ہوئے کا کہ ملک میں رضاکارانہ خدمات سرانجام دینے والی ٹائیگر فورس کی تعداد 9 لاکھ تک پہنچ چکی ہے اور گلگت بلتستان میں پانچ ہزار افراد کی رجسٹریشن ہو چکی ہے گلگت بلتستان سے کم رجسٹریشن کی وج انٹرنیٹ اور بجلی کے مسائل ہیں دو نوں ایشوز حل ہونے کے بعد رجسٹریشن بھی بڑھے گی۔ انہوں نے کہا کہ احساس پروگرام کے تحت مستحق افراد کو 12 ہزار روپے دیئے جارہے ہیں ملک میں ایک کروڈ 20 لاکھ خاندانوں کو احساس پروگرام کے تحت مالی معاونت فراہم کی جارہی ہے 45 لاکھ مستحق خاندانوں کا ڈیٹا ہے جبکہ بقیہ خاندانوں کی لسٹیں صوبائی حکومت اور انتظامیہ کے تعاون سے مرتب کی جائیں گی انہوں نے کہا کہ یوٹیلٹی سٹورز کے لئے 35 ارب روپے مختص کئے گئے ہیں جس سے پورے ملک میں یوٹیلٹی سٹورز کو سامان فراہم کیا جائے گی اس موقع پر چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹنٹ جنرل محمد افضل نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ گلگت اور سکردو میں کرونا وائرس کی ٹیسٹنگ لیبارٹریز کام کر رہی ہے۔ ان کے لئے 15 ہزار ٹیسٹنگ کٹس مذید فراہم کر دی گئی ہیں جن میں سے 10ہزار گلگت اور 5 ہزار ٹیسٹنگ کٹس سکردو کو فراہم کر دی گئی ہیں۔ گورنر راجہ جلال حسین مقپون اور وزیر اعلی حافظ حفیظ الرحمان نے بھی خطاب کیا جبکہ چیف سیکریٹری گلگت بلتستان خرم آغا نے گلگت بلتستان میں کرونا وائرس کے مریضوں اور انتظامات سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی